آپ یہاں ہیں
صفحہ اول > بلاگنگ > بلاگنگ اور اردو بلاگنگ

بلاگنگ اور اردو بلاگنگ

بلاگنگ

بلاگ انگریزی کے دو لفظوں web and log سے مل کر بنا ہے جو ایسی ویب سائٹس کے لیے استعمال کیا جاتا ہے جس میں معلومات کو تاریخ وار رکھا جاتا ہے۔
ویب لاگ ( weblog) کا لفظ جان بارگر Jorn Barger نے پہلی دفعہ 1997 استعمال کیا تھا جو robotwisdom.com نامی ویب لاگ سائٹ چلا رہے ہیں۔ اس کے بعد لفظ بلاگ کو پیٹر مرہولز (Peter Merholz) نے مزاحیہ انداز میں لفظ ویب لاگ کو توڑ کر we blog کے طور پر استعمال کیا اور یہیں سے پھر لفظ بلاگ مشہور ہوگیا۔
Xanga نامی سائٹ جو بلاگنگ میں ایک بڑا نام ہے 1997 تک صرف 100 بلاگ تھے مگر2005 تک 20 ملین سے تجاوز کر چکے تھے۔ اس کے بعد مندرجہ ذیل بلاگ ہوسٹنگ ٹولز میدان میں آئے اور بلاگنگ کو بے پناہ مقبولیت حاصل ہوئی۔
اوپن ڈائری نے سب سے پہلے تبصرے کرنے کی سہولت پیش کی۔

لائیو جرنل

بلاگ کی زیادہ تر قسمیں تحریری ہیں مگر بلاگنگ صرف تحریر تک ہی محدود نہیں ہے ۔ کچھ بلاگ فوٹو گرافی ( فوٹو بلاگ ) ، اسکیچ بلاگ ، وڈیو بلاگ ( وی لاگ ) ، میوزک لاگ ( MP3 blog) ، آڈیو (podcasting) پر توجہ مرکوز رکھتے ہیں اور یہ سب سوشل میڈیا کے بڑے نیٹ ورک کا حصہ ہیں۔
بلاگنگ کی سروس بہت سی کمپنیاں مہیا کرتی ہیں جن میں قابل ذکر مندرجہ ذیل ہیں:

گوگل کا بلاگر(Blogger) یا بلاگسپاٹ(Blogspot)

بلاگر بہت مشہور سروس ہے اور بہت سے مفت ٹیمپلیٹس بھی دستیاب ہیں جن کو بہت حد تک اپنی مرضی کے مطابق ڈھالا جا سکتا ہے۔ ماضی قریب میں توہین آمیز خاکوں کے بحران کے دوران بلاگسپاٹ حکومت پاکستان کی پابندی کی زد میں آچکا ہے۔ جس کی وجہ سے کئی ایک پاکستانی بلاگر بلاگسپاٹ چھوڑ کر ورڈپریس یا دوسری بلاگنگ سروسز پر منتقل ہو گئے۔

مووایبل ٹائپ (Movable TypePad)

موو ایبل ٹائپ بھی ایک مشہور بلاگنگ سروس ہے ۔ شروع میں مووایبل ٹائپ کی سروس مفت تھی لیکن بعد ميں مقبولیت حاصل کرنے کے بعد اس کی فیس مقرر دی گئی۔ موو ایبل دو طرح کی بلاگنگ کا انتخاب دیتی ہے۔ اول آپ اپنا بلاگ مووایبل ٹائپ کی سائٹ پر بلاگ بنا لیں، دوم ان کا سافٹ وئیر لے کر اپنی سائٹ پر نصب کر دیں۔ شروع میں مووایبل ٹائپ کی سروس مفت تھی لیکن بعد ميں مقبولیت حاصل کرنے کے بعد اس کی فیس مقرر دی گئی۔ تاہم حال ہی میں انہوں نے اپنا سافٹ وئیر آزاد مصدر کر دیا ہے۔ اب آپ مفت میں مووایبل ٹائپ ڈاؤن لوڈ کرکے اپنی سائٹ پر نصب کر سکتے ہیں۔ تاہم مووایبل ٹائپ کی سائٹ پر بلاگ بنانے کی صورت میں آپکو فیس ادا کرنی ہوگی۔ مووایبل ٹائپ 2002 تک سب سے مشہور بلاگنگ سروس تھی لیکن فیس مقرر کرنے کے بعد یہ میدان ورڈپریس نے مار لیا۔

ورڈپریس(WordPress)

ورڈ پریس ایک اور بہت مشہور سروس ہے اور بلاشبہ اس وقت بلاگنگ کی دنیا میں راج کر رہی ہے اپنے بے شمار دلکش تھیمز اور پلگ انز کی مدد سے آپ اپنی سائٹ کو بلاگ سے لیکر کسی خبروں کی ویب سائٹ یا پھر کوئی اور شکل دے سکتے ہیں۔ مووایبل ٹائپ کیطرح ورڈپریس بھی دو طرح کی بلاگنگ کا انتخاب دیتی ہے۔ ورڈپریس کی سب سے بڑی خوبی اسکی لچکدار ساخت ہے۔ ورڈپریس کو دنیا کی ہر تحریری زبان میں باآسانی ڈھالا جا سکتا ہے۔ آزاد مصدر ہونے کے سبب اس کے مسائل کیلیے مناسب سپورٹ بالکل مفت ورڈپریس کی سائٹ پر دستیاب ہے، جہاں دنیا بھر سے ورڈپریس کے صارفین باہمی تعاون سے منٹوں میں آپکے مسائل حل کر دیتے ہیں۔

ٹیکنو ریٹی بلاگنگ کا سب سے بڑا سرچ انجن ہے اور اس پر بلاگز کی رینکنگ کے ساتھ ساتھ ہر بلاگ کو پسند کرنے والوں کے شماریات بھی رکھے جاتے ہیں۔ مئی کی بلاگ شماری جو ٹیکنو ریٹی ( بلاگنگ سرچ انجن ) کے مطابق اکہتر ملین کے قریب بلاگ موجود ہیں جن میں
گوگل بلاگ سرچ
آسک بلاگ سرچ
بلاگ لائنز

امریکہ ، کینیڈا ، یوکے ، آسٹریلیا اور نیوزی لینڈ کے بلاگز تقریبا چھتیس ملین ہیں۔

ایشیا کے بلاگز کی تعداد تقریبا پچیس ملین ہے

یورپ کی تقریبا تین ملین 

 

بلاگنگ کی اس تیز رفتار ترقی نے اردو کو بھی متاثر کیا ، دیر سے سہی مگر اردو کمیونٹی نے اس بات کا ادراک کیا کہ بلاگنگ کی دنیا میں ان کا حصہ نہ ہونے کے برابر ہے۔ 2005 اردو بلاگرز سامنے آنے شروع ہوئے اور پھر انہی اردو بلاگرز کی بدولت انٹر نیٹ پر تحریری اردو کی مکمل ویب سائٹس سامنے آنا شروع ہوئیں جن میں اردو ویب محفل ایک مشہور و مقبول ویب سائٹ بن کر سامنے آئی اور بہت ساری دوسری تحریری اردو کی ویب سائٹس کی بنیاد بنی۔ اردو ویب محفل نے بہت سے سافٹ وئیر بھی اردو دنیا کو دیے جن میں اردو ایڈیٹر ، اردو اوپن پیڈ خصوصا قابل ذکر ہیں کیونکہ اس کی وجہ سے ہر سائٹ پر اسے اردو ٹیکسٹ باکس کے طور پر استعمال کرنا ممکن ہوا اور اردو لکھنا اتنا ہی سہل ہوگیا جتنا انگریزی ہے۔ بہت سے دیدہ زیب فانٹس بھی سامنے آنے شروع ہوئے اور اردو کے محبان میں انٹرنیٹ پر اردو لکھنے اور پڑھنے میں بے پناہ اضافہ ہوا۔

اردو بلاگنگ کی سروس شروع کرنے میں تین ویب سائٹس نمایاں ہیں

اردو پوائنٹ بلاگز

اردو ہوم بلاگز

اردو ٹیک بلاگز

اردو پوائنٹ بلاگز

اردو پوائنٹ بلاگز خوبصورت نستعلیق اردو فونٹ(گوہر نستعلیق) کے ساتھ اردو پوائنٹ پر پیش کیے جاتے ہیں مگر یہ نستعلیق فونٹ صرف انٹرنیٹ ایکسپلورر استعمال کنندگان دیکھ سکتے ہیں۔ اردوپوائنٹ کے اعداد و شمار کے مطابق اب تک 68 بلاگرز اپنا بلاگ اردو پوائنٹ پر بنا چکے ہیں اور ان کے بلاگز پر ڈھائی ہزار سے زائد تبصرہ جات موجود ہیں۔

اردو ہوم بلاگز

اردو ہوم نے ورڈ پریس کو بنیاد بنا کر اردو بلاگنگ کی سروس شروع کی اور چند تھیمز کو اردوا کر صارفین کو اردو بلاگنگ کی طرف راغب کیا۔ اس اقدام سے اردو بلاگنگ کی طرف عمدہ پیش رفت ہوئی اور اردو بلاگران کو اپنی ذاتی ویب سائٹ کو اپنی مرضی سے ڈھالنے کا موقع ملا جہاں وہ تھیم میں چند تبدیلیاں کرکے اس مزید بہتر بنا سکے۔ اردو ہوم کے بلاگز کا آغاز تو اچھا تھا مگر صارفین کی شکایات اور ان کی آرا کو لینے کا کوئی انتظام نہ کیا گیا جس کی وجہ سے اردو بلاگران میں تشنگی کا احساس گہرا ہوا اور انہی میں سے چند ایک نے کچھ اور کہنہ مشق اردو بلاگران کی مدد سے ایک اور اردو بلاگنگ سروس کی بنیاد ڈالی جس کا نام اردو ٹیک رکھا گیا۔ یہ کام بروقت ہوگیا کیونکہ کچھ عرصہ قبل اردو ہوم بلاگز ختم کر دیے گئے۔

اردو ٹیک بلاگز

اردو ٹیک بھی مشہور بلاگ سافٹوئیر ورڈ پریس کو استعمال کرتے ہوئے بلاگنگ سروس مہیا کرتی ہے البتہ اس کی خاص بات ورڈ پریس تھیمز کو اردوا کر ان میں اردو پیڈ کو شامل کرنا ہے جس سے پوسٹ پر تبصرہ کرنے کرنے والوں کو بھی اپنے کمپیوٹر پر بغیر اردو کی سپورٹ شامل کیے اردو میں تبصرہ کرنے کی سہولت میسر آتی ہے.
اردو ٹیک کی انتظامیہ کا کہنا ہے کہ ان کا بنیادی مقصد اردو لکھنے پڑھنے والوں کو انٹرنیٹ پر بہترین سہولیات فراہم کرنا اور اظہارِ رائے کی آزادی ہے ۔ اردو ٹیک کی بلاگنگ سروس پر دی جانے والی سہولیات درج ذیل ہیں ۔
  *انتظامیہ کی جانب سے کوئی اشتہار نہیں چلائے جائیں گے ۔
  *آپ اپنے بلاگ پر اپنی مرضی کے اشتہارات لگانے کے مجاز ہیں ۔
  *اظہارِ رائے کی آزادی ۔ آپ کو ہرطرح کے موضوعات پر لکھنے کی آزادی ہے ، اردو ٹیک کی انتظامیہ آپ کی تحریروں میں کسی قسم کی دخل اندازی نہیں کرے گی ۔ تاہم لکھاریوں سے توقع ہے کہ وہ شائستگی کا دامن ہاتھ سے نہ جانے دیں گے ۔
  *SubDomain ۔ دیگر بلاگنگ سروسز کے برعکس اردو ٹیک پر بلاگرز کو سب ڈومین کی سہولت دی جاتی ہے ۔
  * ورڈپریس کے اردو تھیم کی ایک وسیع تعداد ۔ ہر تھیم میں اردو اوپن پیڈ شامل کیا گیا ہے تاکہ لکھاری اور قاری دونوں کو اردو لکھنے میں کوئی دشواری نہ ہو ۔
  *لامحدود ویب سپیس
  *لامحدود ڈیٹابیس کی سپیس
  *لامحدود بینڈوڈتھ
  *آپ کی فرمائش پر تھیم تیار اور فراہم کیے جاتے ہیں
  *آپ کی فرمائش پر پلگ اِن فراہم کی جاتی ہے
  *FTP کی سہولت عنقریب فراہم کی جائے گی ۔

بشکریہ: محب علوی

5 تبصرے:

  1. شکریہ ماورا۔۔ اردو پاکستان کی ہی نہیں ہندوستان کی بھی قومی زبان ہے، یعنی یہاں کی قومی زبانوں میں سے ایک۔۔۔
    لیکن ہند و پاک کے علاوہ اردو کی نئی بستیوں کی تو قومی زبان نہیں نا۔۔۔

اپنا تبصرہ تحریر کریں

اوپر