آپ یہاں ہیں
صفحہ اول > bilaal > ایم بلال سے شناسائی

ایم بلال سے شناسائی

السلام علیکم.
ہمارے آج کے مہمان ایک اردو بلاگر ہیں، گو کہ آپ آجکل بلاگنگ کم ہی کر رہے ہیں، لیکن جتنا آپ نے لکھا یا اردو کے لیے کام کیا وہ قابل تعریف ہے۔ آپ خاموشی سے اپنا کام کرتے ہیں اور پھر اچانک اپنے شاہکار کو لوگوں کے سامنے پیش کر دیتے ہیں۔ آپ نے اردو اور کمپیوٹر پر ایک کتابچہ پی ڈی ایف فائل کی صورت میں بنایا ، جو نئے اردو بلاگرز یا یوزرز کے لیے نہایت ہی مفید ثابت ہو سکتا ہے۔ آپ اچھی طبیعت کے ساتھ ساتھ اچھی سوچ کے بھی مالک ہیں۔ آپ کا کہنا ہے کہ ۔۔۔

“یوں تو میں کسی قابل نہیں۔ سمندر میں ایک قطرے سے بھی کم اہمیت ہے لیکن “قطرہ قطرہ ملے تو سمندر ضرور بنتا ہے” کا قائل ہوں۔ اسی سمندر کی تلاش کے لئے مثبت، فکری اور انقلابی سوچ کو اپنے اندر اور دوسروں کے اندر بیدار کرنے کی وقتاً فوقتاً کوشش کرتا رہتا ہوں۔ ہر بندہ اپنا ایک الگ اندازِ بیاں اور اندازِ سوچ رکھتا ہے اور اگر اسی انداز کو مثبت پہلو دے دے تو وہ کم از کم فکری انداز کا مالک ضرور بن جاتا ہے۔”

تو آئیے ایم بلال کے بارے میں مزید جاننے کے لیے ان سے بات چیت کا آغاز کرتے ہیں۔
خوش آمدید بلال.
شکریہ منظرنامہ و ناظمین

سب سے پہلے ہم آپ کے بارے میں کچھ جاننا چاہیں گے۔

– آپ کی جائے پیدائش اور حالیہ مقام کون سا ہے؟
@ ضلع گجرات کا ایک چھوٹا سا دیہات اور حالیہ مقام بھی یہی ہے.

– کچھ اپنی تعلیم اور خاندانی پس منظر کے بارے میں بتائیں؟
@ بقول میرے خاندان کے میں ان پڑھ ہوں وہ اس لئے کہ صرف بی ایس کمپیوٹر سائنس کیا اور اس کے بعد کچھ نہیں۔ ویسے اگر میں اپنے خاندانی پس منظر کو دیکھو تو پھر میں واقعی نکما اور ان پڑھ ہوں۔
اس کے علاوہ ایک زمیندار گھرانہ سے تعلق ہے میرے پر دادا کھیتی باڑی کرنے کے ساتھ ساتھ ایک قابل حکیم بھی تھے۔ دادا پہلے سرکاری ملازم رہے پھر وہ بھی کھیتی باڑی کی طرف آ گئے۔ میرے دادا کو اردو ،پنجابی، عربی، فارسی اور انگریزی پر کافی عبور تھا۔ میرے والد صاحب سرکاری ملازم ہیں۔ ہم آج بھی تھوڑی بہت کھیتی باڑی کرتے ہیں۔

– آپ کی زندگی کا مقصد کیا ہے ،کوئی ایسی خواہش جس کی تکمیل چاہتے ہوں؟
@ میری زندگی کا مقصد یہ ہے کہ میں اپنی زندگی کے اصل مقصد کو پہچان سکوں اور اس پر عمل کر سکوں۔ باقی خواہشات کا پہاڑ ہے ایک چھوٹی سی خواہش ہے کہ” پاکستان کو اپنی زندگی میں پرامن اور ترقی کرتا دیکھ سکوں۔” یہ میری ایک چھوٹی خواہش ہے ذرا سوچیں کہ بڑی کیا ہوں گی۔

– یہ بتائیے کہ بلاگنگ کے بارے میں کب اور کیسے پتا چلا تھا؟
@ 2007 میں گوگل کی مہربانی سے اردو محفل ملی اور محفل سے ہی پتہ چلا کہ بلاگنگ بھی کوئی چیز ہے۔ مزید اس کی تفصیل ماوراء نے سمجھائی کہ بلاگ کیا ہوتا ہے، کیوں ہوتا ہے، کس لئے ہوتا ہے وغیرہ وغیرہ۔

– کب سوچا کہ خود بھی بلاگنگ شروع کرنی چاہیے؟ اور کیوں؟
@اردو محفل پر مختلف دوستوں نے مشورہ دیا کہ اپنا بلاگ بناؤ۔اس کے علاوہ مختلف بلاگ کے بارے میں پتہ چلا تو وہاں جاتا انہیں پڑھتا اور کبھی کبھی دل کرتا کہ میں بھی اپنا بلاگ بناؤں اور شائد اردو ٹیک پر رجسٹر بھی کیا تھا یہ اپریل 2008 کی بات ہے ان دنوں خوب بلاگ پڑھنے کے ساتھ ساتھ میں اس نتیجہ پر پہنچا کہ بلاگ سے بہتر فورم ہے۔ میری اس سوچ کی ایک مثال آپ یہاں دیکھ سکتے ہیں لیکن ساتھ ساتھ میں بلاگ بنانے کی کوشش میں بھی تھا کیونکہ میں چاہتا تھا کہ دونوں سے فائدہ اٹھایا جائے۔ آخر کار مئی 2008 کے آخر میں میں بلاگ بنانے پر سنجیدہ ہو گیا اور رہنمائی حاصل کرنے کے لئے محفل پر یہ دھاگہ شروع کیا اور جون 2008 میں اپنا بلاگ بنا ہی لیا۔ سارہ خان، ماوراء ، عمارضیاء اور اردو محفل کی مدد نہ ملتی تو شائد میں آج بھی بلاگ سے بہت دور ہوتا۔ شروع میں بس اپنا بلاگ بنانا ہی مقصد تھا اور کچھ نہیں تھا لیکن اب الحمد اللہ بلاگ کے حوالے سے میرے سامنے ایک مقصد ہے ایک منزل ہے۔

– بلاگنگ کے آغاز میں کن کن مشکلات کا سامنا رہا؟
@ مجھے زیادہ تر بنیادی معلومات کے حصول میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑا کیونکہ مجھے یہ تک نہیں پتہ تھا کہ ورڈپریس کیا ہے۔ اور تو اور ایک جگہ عمار نے لکھا کہ آپ ورڈ پریس کے اردو سانچے فلاں جگہ سے ڈاؤن لوڈ کر لیں تو میں نے جواب میں پوچھا جناب یہ سانچہ کیا ہوتا ہے؟ سیدھی سی بات ہے جب بنیاد کا ہی نہیں پتہ تھا تو مشکلات تو ہونی ہی تھیں۔ کئی کئی گھنٹے چھوٹی چھوٹی چیز کو سمجھنے اور تلاش کرنے میں لگا دیئے۔ تھیم یعنی سانچہ کہاں ہوتا ہے؟ اس میں تبدیلی کیسے کرتے ہیں؟ اور پھر اردو سپورٹ کیسے شامل کرتے ہیں؟ ورڈ پریس کو استعمال کیسے کیا جاتا ہے وغیرہ وغیرہ۔ لیکن جن دوستوں کا میں پہلے ذکر کر چکا ہوں وہ اور اردو محفل نے قدم قدم پر مجھے سہارا دیا ،مجھے سیکھایا اور ہمت بڑھاتے رہے۔ میں ان تمام کا تہہ دل سے شکر گزار ہوں کیونکہ انہیں لوگوں کی بنیادی معلومات مہیا کرنے کی وجہ سے آج میں کم از کم ایک اچھا بلاگ سیٹ اپ اور اس کی تھیم خود سے بنا سکتا ہوں۔

– آپ بلاگ پر کس قسم کے موضوعات پر لکھتے ہیں ؟
@شروع میں تو چند پرانی تحریر جو سیاست اور معاشرہ پر لکھی ہوئی تھی وہ ہی بلاگ پر پوسٹ کر دیں۔ اب بھی ان موضوعات پر لکھتا ہوں لیکن کبھی کبھی۔ اس علاوہ مستقبل میں زیادہ توجہ فروغ اردو و اردو کمپیوٹنگ اور دیگر تعمیری مقاصد کے موضوعات پر لکھنے کا پروگرام ہے۔ باقی اللہ بہتر کرنے والا ہے۔

– آپ اتنا اچھا لکھتے ہیں ۔ لیکن آجکل آپ کے بلاگ پر تحاریر کم دکھائی دے رہی ہیں، اس کی کیا وجہ ہے؟
@ آپ تحریر پر تبصرہ ہی نہیں کرتے تو پھر لکھنے کا فائدہ؟ ہا ہا ہا یہ صرف مزاح کے لئے تھا۔ باقی حقیقت یہ ہے کہ کچھ مصروفیات اور کچھ میرے عجیب و غریب شوق و جنون لیکن امید ہے آپ لوگ جلد ہی میرے بلاگ پر کچھ اچھا دیکھیں گے۔ جیسے میں آج کل بنیادی نوعیت کی اردو کمپیوٹنگ، اردو بلاگنگ وغیرہ پر لکھ رہا ہوں جو کہ ابھی آف لائن ہی ہیں جیسے ہی کوئی کتابچہ مکمل ہوگا تو اسے بلاگ اور دیگر فورم پر پوسٹ کر دوں گا۔

– یہ بتائیے کہ آپ کے بلاگ پر ہمیں بہت سی معلوماتی تحاریر دیکھنے کو ملتی ہیں، جیسے کمپیوٹر پر اردو لکھنے کے اصول، یونیکوڈ یا رسم الخط کیا ہے؟ شامل ہیں، مزید آپ نے اردو کلیدی تختہ بھی بنایا ہے، اس بارے میں کچھ بتائیں کہ اردو کمپیوٹنگ کی طرف پہلے سے رحجان تھا یا اچانک ہی اس کے بارے میں لکھنے یا کام کرنے کا خیال آیا؟
@اردو کمپیوٹنگ کی طرف رحجان تو بہت پرانا ہے۔ بہت پہلے جب بلاگ کا نہیں پتہ تھا اور فورم پر میں جاتا نہیں تھا تب بھی اردو اور اردو کمپیوٹنگ کے لئے کچھ کرنے کو دل کرتا رہتا تھا اور تھوڑا بہت کام کرتا بھی تھا ۔ چھوٹے شہر اور دیہات میں رہنے کے جہاں دیگر دوسرے مسائل ہیں وہاں ایک یہ بھی تھا کہ جو فاصلے بڑے شہر اور جدید ٹیکنالوجی والوں نے مہینوں میں تہہ کئے وہ میں نے سالوں میں تہہ کئے۔ لیکن اب اگر اللہ تعالیٰ نے توفیق دی تو جہاں تک مجھ سے ہو سکا آپ سب دوستوں کے تعاون سے نئے آنے والوں کے وہی اردو کمپیوٹنگ کے مسائل کے حل سالوں نہیں مہینوں نہیں بلکہ صرف چند منٹوں پر مہیا کرنے کی کوشش کروں گا۔جس کے لئے میں اردو کمپیوٹنگ، اردو بلاگنگ، اردو ویب سائٹس کے متعلق بالکل بنیادی باتیں صرف ایک کلک کے فاصلے پر رکھنا چاہتا ہوں۔ عام طور پر لوگ بنیادی معلومات لکھنے سے پہلے سوچتے ہیں کہ یہ تو وہ باتیں ہیں جو سب کو پتہ ہوں گی کچھ علیحدہ سے لکھنا چاہئے۔یہاں میں یہ نہیں کہتا کہ اردو کمپیوٹنگ پر بنیادی معلومات آج تک لکھی ہی نہیں گئی آپ یوں کہہ سکتے ہیں کہ میں تمام بکھری ہوئی معلومات کو ایک جگہ جمع کرنا چاہتا ہوں تاکہ ان تک رسائی آسانی سے ہو۔ میرے خیال میں اردو کمپیوٹنگ کاعام لوگوں کو بہت کم پتہ ہے اور جب کوئی اس طرف آتا ہے تو اسے بے شمار مسائل کے حل کی تلاش کرنے اور بنیادی معلومات کے حصول کے لئے کافی وقت دینا پڑتا ہے۔ جب کسی منزل کی طرف جانے کی بنیادی معلومات مل جاتی ہیں تو پھر بندہ ادھر اُدھر سے پوچھ پوچھ کر منزل تک پہنچ ہی جاتا ہے ، میرے نزدیک زیادہ اہمیت بنیادی معلومات کی ہے۔ اس لئے میں صرف ایک کلک کے فاصلے پر زیادہ سے زیادہ بنیادی معلومات دینا چاہتا ہوں۔

– کیا آپ سمجھتے ہیں کہ بلاگنگ سے آپ کو کوئی فائدہ ہوا ہے؟ یا کیا فائدہ ہوسکتا ہے؟
@ میرے خیال مجھے بلاگنگ سے بہت فائدہ ہوا ہے، ہو رہا ہے اور امید ہے ہوتا رہے گا۔ میرے نزدیک تو لوگوں میں شعور بیدار کرنے کے لئے یہ ایک بہترین ذریعہ ہے۔ جب لوگ ایک دوسرے کے نظریات جانیں گے۔ مختلف مکاتب فکر کو آسانی سے پڑھ سکیں گے۔ تو نئی سے نئی راہیں کھلیں گی۔ شعور کی منازل تہہ ہو گیں۔

– اگر آپ کو اردو کے ساتھ تعلق بیان کرنے کو کہا جائے ، تو اس کو کیسے بیان کریں گے ؟
@ میری مادری زبان پنجابی ہے، میرے ملک کے بہت کم لوگ ٹھیک اردو بولتے ہیں جن میں میں شامل نہیں ہوں کیونکہ مجھے اردو آتی ہی نہیں، لیکن پھر بھی مجھے اس سے پیار ہےکیونکہ اردو زبان کی ترقی میں ہی میری اور میرے ملک کی ترقی پوشیدہ ہے۔ یار لوگ کہتے ہیں کہ جب ہم ترقی کریں گے تو اردو خودبخود ترقی کرے گی جبکہ میں کہتا ہوں جب ہم اردو سے پیار کریں گے تو ہم آسانی سے اور جلدی ترقی کرسکیں گے۔

– آپ کیا سمجھتے ہیں کہ اردو کو وہ مقام ملا ہے، جس کی وہ مستحق تھی؟
@اردو اور دیگر مقامی زبانوں کو اگر ہم وہ مقام دیتے جن کی وہ مستحق تھیں تو یقنا یہ زبانیں بھی ہمیں وہ مقام دے دیتیں جو کسی ترقی یافتہ ملک سے کم نہ ہوتا۔

– آنے والے دس سالوں میں اپنے آپ کو اور اردو بلاگنگ کو کہاں دیکھتے ہیں؟
@ اپنی عمر میں دس سال اضافہ یا موت دیکھتا ہوں۔ اردو بلاگنگ کو اچھے ، محنتی اور لگن والے لوگ اسی طرح ملتے رہے تو یقینا اسے بہت ترقی کرتا ہوا دیکھ رہا ہوں۔

– بلاگ کے علاوہ دیگر کیا مصروفیات ہیں؟ یا آجکل کن پراجیکٹس پر کام کر رہے ہیں؟
@ کچھ خاص نہیں بس آج کل صحافت کا شوق چڑھا ہوا ہے۔ چند پراجیکٹس کا اوپر ذکر کر چکا ہوں۔

– کسی بھی سطح پر اردو کی خدمت انجام دینے والوں اور اردو بلاگرز کے لیے کوئی پیغام؟
@یوں تو میں اس قابل نہیں کہ اردو کی خدمت کرنے والے عظیم لوگوں کو اپنا پیغام دوں بس دعا کی اپیل کر سکتا ہوں کہ مجھ جیسے لوگوں کے لئے دعا کریں کہ ہم بھی اردو کے لئے کچھ کر سکیں۔ باقی بلاگر دوستوں کو یہی کہوں گا ہمت نہ ہارنا مجھ جیسے کئی خاموش قاری ہیں جو آپ کو پڑھتے ہیں۔ ویسے بھی آپ کا کام ہے پیغام پہنچا دینا بس۔ میں نے اپنے بلاگ پر جب پہلی تحریر لکھی تو کوئی تبصرہ یا رائے نہیں ملی۔ لیکن میں پھر بھی لکھتا رہا اور پھر ایک مہینے اور چھ دن بعد جب افتخار اجمل بھوپال صاحب نے پہلا تبصرہ کیا تو مجھے خوشی ہوئی لیکن اس خوشی کا لکھنے یا نہ لکھنے سے کوئی تعلق نہیں تھا۔

کچھ سوال ذرا ہٹ کے۔۔۔
پسندیدہ:
1۔ کتاب ؟
قرآن پاک (کیونکہ یہ وہ کتاب ہے جس میں کوئی شک نہیں اور اگر میں اس کے احکامات پر عمل کرو گا تو یہ مجھے ایک اچھا مسلمان اور انسان بنا دے گی)
2۔ شعر ؟
فرد قائم ربط ملت سے ہے تنہا کچھ نہیں
موج ہے دریا میں بیرون دریا کچھ نہیں

3۔ رنگ ؟
دھرتی کے سب رنگ پیارے ہے۔
4۔ کھانا )کوئی خاص ڈش( ؟
دال چاول
5۔ موسم
ہر موسم کا اپنا اپنا مزہ ہے۔

غلط/درست:

1۔ مجھے بلاگنگ کی عادت ہو گئی ہے؟
غلط ( بلکہ دوسرے بلاگ پڑھنے کی عادت ہو گئی ہے)
2۔ مجھے اکثر اپنے کئے ہوئے پر افسوس ہوتا ہے؟
بہت کم ایسا ہوتا ہے مگر جب ہوتا ہے تو میں اسی افسوس سے مزید بہت کچھ سیکھتا بھی ہوں۔
3۔ مجھے ابھی بہت کچھ سیکھنا ہے؟
درست۔
4۔ مجھے کتابیں پڑھنے کا شوق ہے؟
شوق بہت ہے لیکن پڑھی بہت کم ہیں۔
5۔ میں ایک اچھا دوست ہوں؟
یہ تو پتہ نہیں لیکن میرے دوست بہت اچھے ہیں۔
6۔ مجھے غصہ بہت آتا ہے؟
درست (ویسے یہ کوئی پوچھنے والی بات ہے ہر کسی کو غصہ آتا ہے مگر کوئی صبر کرتا ہے اور کوئی اظہار کرتا ہے۔)

کوئی ایک منتخب کریں :
1۔ دولت، شہرت یا عزت؟
عزت
2۔ علامہ محمد اقبال، خلیل جبران یا ولیم شکسپئر؟
حکیم الامت علامہ محمد اقبال رحمتہ اللہ علیہ
3۔ پسند کی شادی یا ارینج شادی؟
ارینج شادی مگر پسند کر کے کیونکہ میں لاٹری کے حق میں نہیں۔
5۔پاکستان، امریکہ یا کوئی یورپین ملک؟
پاکستان

اگر آپ سمجھتے ہیں کہ ہمیں کچھ پوچھنا چاہیے تھا، لیکن ہم نے پوچھا نہیں اور آپ کچھ کہنا چاہتے ہوں تو آپ کہہ سکتے ہیں۔
@ آپ نے جو کچھ پوچھا ہے میں نے اس پر بھی کافی وضاحت سے کام لیا ہے اور اب پڑھنے والے بور ہو چکے ہیں اس لئے کافی ہے اتنا ہی۔

بلال، اپنا قیمتی وقت نکال کر منظر نامہ کے لیے جواب دینے کا بہت بہت شکریہ۔

18 تبصرے:

  1. السلام علیکم میں نے کل بھی تبصرہ کیا تھا وہ پتہ نہیں کیا ہوا شاید ارسال کرنے سے پہلے ہی کچھ مسئلہ ہو گیا ہو گا

    بلال بھائی کے بارے میں جان کر بہت خوشی ہوئی ویسے کچھ میں جانتا ہوں اور کچھ اب جان کر بہت اچھا لگا بلال بھائی بہت نیک انسان ہیں اللہ تعالیٰ ان کو کامیاب فرمائے آمین

    ویسے بلال بھائی آپ کی اور میری ایک بات ایک جیسی ہے
    آپ کو بھی دال چاول اچھے لگتے ہیں اور مجھے بھی ہی ہی ہی
    [rq=17815,0,blog][/rq]پاکستان زندہ باد

  2. دو باتیں:
    جہاں تک کام کا تعلق ہے، جو کام ہم بڈھے بلاگرز نے اتنے عرصے میں نہیں کیا وہ بلال نے ایک پوسٹ کر کے کر دیا، یعنی یونیکوڈ اردو نہ جاننے والے لیکن شوقین افراد کیلئے پی ڈی ایف کتابچہ بنا دیا اور اسمیں سکرین شاٹ تک دے دیے تا کہ مجھ جیسے بدھو کو بھی سمجھ آ جائے۔ انکے کام کا میں نے اپنی روایتی سستی کے پیش نظر اپنے بلاگ پر لنک دے دیا ہے تا کہ جو حضرات مجھ سے مدد چاہیں وہ سیدھے بلال کے بلاگ پر پہنچ کر کتابچہ اتار لیں۔
    دوسری بات ذرا ذاتی نوعیت کی ہے۔ اگر آپکا نام محمد بلال ہے تو ایم بلال لکھنے کی کیا تک ہے؟ محمد جیسے خوبصورت نام کو لفظ ایم سے بدلا جا سکتا ہے کیا؟ ہاں اگر کچھ اور ہے مثلا میاں بلال تو پھر آپکی مرضی ہے۔ ویسے میں تو پھر بھی نہ بدلتا کہ کم از کم صنف نازک مجھے میاں تو کہتی 😀
    [rq=22115,0,blog][/rq]From King’s park, Canberra

  3. نوائے ادب یعنی خرم شہزاد خرم بھائی آپ میرے بارے میں کچھ نہیں بلکہ کافی کچھ جانتے ہیں جناب بلکہ نیٹ پر شاید ہی کوئی میرے بارے میں اتنا جانتا ہو جتنا آپ جانتے ہیں…
    ////////////////
    انکل اجمل بس دعا کیجئے کہ اللہ تعالیٰ ہماری سوچ کو مثبت اور ہمارے کردار کو بہتر کر دے۔۔۔ باقی امید ہے آپ سے جلد رابطہ ہو گا۔
    ////////////////
    وارث صاحب آپ کا شکریہ بلکہ دعاؤں کے لئے تو بہت بہت شکریہ۔ مجھے شاعری کا کچھ پتہ نہیں تھا لیکن اب آپ کا بلاگ بہت مدد کر رہا ہے۔
    ////////////////
    تمام احباب کا ایک بار پھر شکریہ کہ آپ نے اس ناچیز کی حوصلہ افزائی فرمائی۔۔۔

  4. بہت شکریہ فیصل صاحب
    پہلی بات کہ آپ نے میری چھوٹی سی کاوش کو پسند کیا اس کے لئے میں آپ کا تہہ دل سے مشکور ہوں۔
    دوسری بات میرے نام کے متعلق تو جناب آپ نے اچھی طرف توجہ دلائی ہے۔ میں بھی اس بارے میں کچھ سوچ رہا ہوں بلکہ کافی عرصہ سے سوچ رہا ہوں۔ ویسے ہے تو یہ ایک لمبی کہانی لیکن آپ کو سنا ہی دیتے ہیں۔
    ہوا کچھ یوں کہ میرا نام محمد بلال نہیں تھا۔ میٹرک کی سند پر بھی نام کے ساتھ “محمد” نہیں اورتو اور برتھ سرٹیفیکیٹ پر بھی نہیں تھا ۔جب کالج میں گئے تو کسی جگہ فارم پر غلطی سے نام کے ساتھ لفظِ محمد کا اضافہ ہو گیا۔جب سالانہ امتحان قریب آئے تو سوچا نام کی درستگی کروا لی جائے لیکن دل کیا کہ رہنے دیتے ہیں اتنا اچھا اضافہ ہو گیا ہے۔پھر میں نے کئی جگہ پر نام کی تبدیلی کروائی اس سے ہوا یوں کہ میرا نام جو بلال اور ساتھ میں میرا خاندانی نام تھا کے ساتھ ایک مزید بہتر اضافہ بھی ہو گیا اور یوں نام کے حروف پہلے سے زیادہ ہوگئے۔ میں چاہتا کہ جہاں بھی میرا نام لکھا جائے ساتھ میں میرا خاندانی نام ہو یا نہ ہو لیکن محمد ضرور ہو۔ انٹرنیٹ کی دنیا میں آئی ڈی بنایا تو وہ کافی لمبا تھا ۔ میں اسے شارٹ کرنا چاہتا تھا لیکن ساتھ میں محمد بھی ضرور رکھنا چاہتا تھا۔ لوگ مجھے بلال کے نام سے جانتے ہیں تو اس کا حل میں نے یہ نکالا کہ محمد کا ایم لگا لیا اور ساتھ میں بلال۔ یہ سب انگریزی حروف کی بات کر رہا ہوں۔ میں جہاں بھی سائن کرتا یا صرف شارٹ نام لکھنا ہوتا تو ساتھ میں “ایم” ضرور لکھتا۔ فورم اور بلاگ کی طرف آیا تو” M “کو اردو میں “ایم” کر دیا جبکہ “م” کر دیتا تو شاید زیادہ بہتر ہوتا۔ جب ڈومین نام رکھنے لگا تو “محمد بلال” کافی لمبا ہو رہا تھا یعنی تقریبا کوئی تیرہ حرف بن رہےتھے تو میں نے صرف “ایم بلال” کر دیا کیونکہ میں خالی “بلال” نہیں رکھنا چاہتا تھا۔ انٹرنیٹ پر ایک جگہ ایم بلال کیا لکھنا شروع کیا پھر ہر جگہ یہی لکھتا تاکہ دوسروں کو آسانی سے پتہ چل سکے کہ یہ کونسا “بلال” ہے۔اب جیسے آپ کے نام “فیصل” سے مجھے ابھی تک یہ ٹھیک طرح اندازہ نہیں ہو سکا کہ آپ “شاہ فیصل” والے “فیصل” صاحب ہیں یا کوئی اور “فیصل” ہیں۔ اسی چیز کے حل کے لئے میں ہر جگہ ایک ہی نام لکھتا ہوں تاکہ آسانی سے پہچان ہو سکے۔ میرے بھائی جہاں تک مجھے لگتا ہے اس طرح نام شارٹ کرنے سے کوئی بے حرمتی نہیں ہوتی۔ اگر اس طرح بے حرمتی ہوتی ہے تو پھر “محمد بلال” کو خالی “بلال” لکھنا بھی تو ٹھیک نہیں۔
    میں نے “محمد” کو “ایم” سے نہیں بدلہ بلکہ سوچا کچھ نہ ہونے سے بہتر ہے کچھ ہو جائے۔ اس لئے “محمد” کے پہلے حرف کا استعمال کرتا ہوں۔ ویسے بھی جہاں شارٹ نام لکھنا ہوتا ہے وہاں ایم بلال لکھتا ہوں اور جہاں پورا لکھنا ہوتا ہے وہاں پورا ہی لکھتا ہوں۔ میرے خیال میں اکثر لوگ جانتے ہیں کہ نام کے شروع میں ایم عام طور پر وہی لکھتے ہیں جن کا نام محمد سے شروع ہوتا ہے۔
    باقی میں نے اس بارے میں کئی مضامین پڑھے ہیں لیکن مجھے نہیں لگتا کہ خالی ایم لکھنے میں کوئی مسئلہ ہے۔ باقی اللہ بہتر جاننے والا ہے۔۔۔
    اگر آپ اس معاملے میں مزید راہنمائی کر سکیں تو یہ میرے لئے بہتر ہو گا۔ ویسے بھی میں نے اس معاملے میں تمام راستے کھول رکھے ہیں۔ اگر مجھے کوئی مستند دلیل اور بحث برائے تعمیر ملے تو میں اپنی تحقیق کے بعد ماننے کے لئے تیار بیٹھا ہوں۔ بہتر یہی ہے کہ ہم کہیں اور اس معاملے پر بحث کریں۔ ویسے اس کے لئے اردومحفل یا اس جیسی کوئی اور فورم بہتر رہے گی۔ میں اس کام کے لئے کوئی دھاگہ تلاش کرتا ہوں اگر پہلے سے موجود ہوا تو ٹھیک نہیں تو نیا شروع کر لیں گے۔۔۔
    شکریہ
    [rq=31135,0,blog][/rq]انٹرنیٹ، جدید ٹیکنالوجی اور ہماری سوچ

  5. آپ کے بارے میں جان کر بہت اچھا لگا، خاص طور پہ اس لیے کہ آپ اپنے “گرائیں” نکل آئے ہیں! 😛 آپ کی ایک عادت بھی مجھ سے ملتی ہے ، بلاگ پڑھنے کی!
    آپ کے خیالات بھی قابلِ تعریف ہیں اور مقاصد بھی۔ اللہ پاک آپ کو کامیاب فرمائے۔ (آمین)
    [rq=34529,0,blog][/rq]کچھ انجینئرنگ کے بارے میں

  6. بلال بھائی
    مفصل جواب کا شکریہ۔ آپکے نام کی بابت میں نے ایک دل میں آئی بات کہی تھی، باقی اگر آپ مطمئن ہیں اور تحقیق بھی کر چکے ہیں تو کوئی مضائقہ نہیں۔
    ارے ہاں بھائی میں شاہ فیصل ہی ہوں۔ 🙂

  7. بلال صاحب بہت اچھا انٹرویو دیا ہے آپ نے
    اور آپ کی وہ پی ڈی ایف فائل بڑے کام کی ہے
    مجھ سے تو جو بھی اردو یونیکوڈ سے متعلق کچھ ممد مانگتا ہے تو اس کو اس پی ڈی ایف کا لنک دے دیتا ہوں
    اور کہہ دیتا ہوں کہ اگر اب بھی سمجھ نا آئے تو پوچھیں
    اور ابھی تک تو کسی نے بھی دوبارہ نہیں پوچھا :grins:

  8. اقتباس» عین لام میم نے لکھا:
    آپ کے بارے میں جان کر بہت اچھا لگا، خاص طور پہ اس لیے کہ آپ اپنے “گرائیں” نکل آئے ہیں! 😛 آپ کی ایک عادت بھی مجھ سے ملتی ہے ، بلاگ پڑھنے کی!
    آپ کے خیالات بھی قابلِ تعریف ہیں اور مقاصد بھی۔ اللہ پاک آپ کو کامیاب فرمائے۔ (آمین)

    بہت شکریہ عین لام میم صاحب۔۔۔
    مجھے بھی یہ جان کر بہت اچھا لگا کہ چلیں کوئی تو ہمارا گرائیں نکلا۔۔۔
    میری بلاگ پڑھنے کی عادت کے علاوہ ایک عادت یہ بھی ہے کہ میں تبصرے بہت کم کرتا ہوں جو کی میرے خیال میں غلط ہے۔۔۔
    اللہ تعالیٰ آپ کو خوش رکھے۔۔۔آمین

    اقتباس»
    فیصل نے لکھا:

    بلال بھائی
    مفصل جواب کا شکریہ۔ آپکے نام کی بابت میں نے ایک دل میں آئی بات کہی تھی، باقی اگر آپ مطمئن ہیں اور تحقیق بھی کر چکے ہیں تو کوئی مضائقہ نہیں۔
    ارے ہاں بھائی میں شاہ فیصل ہی ہوں۔ 🙂

    آپ کے دل میں بات آئی آپ نے پوچھی اور میں نے جواب دے دیا۔۔۔ ویسے میرے خیال میں اس طرح کی تحقیق اگر بہتر انداز میں ہو تو بہت اچھا ہوتا ہے۔۔۔
    آپ شاہ فیصل ہیں تو پھر تو بڑے جانے پہچانے ہیں۔۔۔

    اقتباس»
    DuFFeR – ڈفر نے لکھا:

    بلال صاحب بہت اچھا انٹرویو دیا ہے آپ نے
    اور آپ کی وہ پی ڈی ایف فائل بڑے کام کی ہے
    مجھ سے تو جو بھی اردو یونیکوڈ سے متعلق کچھ ممد مانگتا ہے تو اس کو اس پی ڈی ایف کا لنک دے دیتا ہوں
    اور کہہ دیتا ہوں کہ اگر اب بھی سمجھ نا آئے تو پوچھیں
    اور ابھی تک تو کسی نے بھی دوبارہ نہیں پوچھا :grins:

    ڈفر صاحب بہت بہت شکریہ کہ آپ نے اس ناچیز کا انٹرویو پسند کیا اور ساتھ ساتھ اردو اور کمپیوٹر کتابچہ بھی پسند کیا اور ہاں اگر کسی کو کتابچہ پڑھنے سے بھی سمجھ نہ آئے تو اس کا مسئلہ مجھے ضرور بتانا تاکہ اس کا حل بھی کتابچہ میں شامل کیا جا سکے۔۔۔
    [rq=45800,0,blog][/rq]انٹرنیٹ، جدید ٹیکنالوجی اور ہماری سوچ

  9. بہت شکریہ محمد بلال بھائی
    اور شگفتہ آپی بلال بھائی کا تو مجھے پتہ نہیں مجھے جب غصہ آتا ہے تو میں‌کھانا زیادہ کھاتا ہوں
    لیکن جب سے ابوظہبی آیا ہوں یہاں کا کھانا مجھے موٹا کر رہا ہے اس لیے غصہ نہیں‌کرتا 😀
    پھر کھانا زیادہ کھانا پڑتا ہے نا
    [rq=63802,0,blog][/rq]کتنی سرحدیں بناؤ گے

  10. اقتباس» شگفتہ نے لکھا: السلام علیکم
    بلال بھائی ، آپ کا انٹرویو اچھا لگا ، آپ سے ایک سوال بھی ، آپ نے غصہ کے بارے میں لکھا ہے تو آپ غصہ کا اظہار کس طرح کرتے ہیں ؟

    شگفتہ بہن انٹرویو پسند کرنے کا بہت شکریہ۔۔۔ رہا آپ کے سوال کا جواب تو وہ یہ ہے کہ مختلف بندوں کے ساتھ غصہ مختلف نوعیت کا ہوتا ہے اس لئے اظہار بھی مختلف ہوتا ہے۔۔۔ زیادہ تر مجھے غصہ ناانصافی اور اپنی غلطی تسلیم نہ کرنے والے پر آتا ہے۔۔۔ عام طور پر جس پر غصہ آئے تو میں اس کو دلائل کے ساتھ سمجھانے کی کوشش کرتا ہوں اگر پھر بھی معاملہ حل نہ ہو اور میرا غصہ کچھ ایسا ویسا کرنے کا سوچے تو میں کوشش کرتا ہوں کہ درود شریف پڑھوں اور اگر ایسا کرنے میں کامیاب ہو جاؤں تو پھر غصہ نہیں رہتا اور معاملہ رفع دفعہ ہو جاتا ہے(کیونکہ مار کھانے سے بہتر ہے چپ ہو جاؤ 😀 )۔ ویسے اگر مجھے یہ لگے یا زیادہ ووٹ میرے مخالف ہوں جو یہ ثابت کریں کہ غلطی میری تھی تو پھر میں اپنی غلطی کو تسلیم کرنے اور اپنی اصلاح کرنے کے لئے ہر وقت تیار رہتا ہوں۔۔۔ عام طور پر مجھ سے پہلی دفعہ ملنے والا شخص یہی اندازہ لگاتا ہے کہ میں بہت غصے والا انسان ہوں لیکن دو تین ملاقات کے بعد کہتا ہے”تسی تے بڑے مخولیے اوہ” :haha: :grins: 😀

    اقتباس»
    نوائے ادب نے لکھا:
    بہت شکریہ محمد بلال بھائی
    اور شگفتہ آپی بلال بھائی کا تو مجھے پتہ نہیں مجھے جب غصہ آتا ہے تو میں‌کھانا زیادہ کھاتا ہوں
    لیکن جب سے ابوظہبی آیا ہوں یہاں کا کھانا مجھے موٹا کر رہا ہے اس لیے غصہ نہیں‌کرتا 😀
    پھر کھانا زیادہ کھانا پڑتا ہے نا

    خرم شہزاد خرم بھائی آپ کا بھی بہت بہت شکریہ۔۔۔
    آپ غصہ میں زیادہ کھاتے ہیں اور مجھے غصہ میں بالکل بھوک نہیں لگتی۔۔۔
    [rq=68082,0,blog][/rq]انٹرنیٹ، جدید ٹیکنالوجی اور ہماری سوچ

  11. السلام علیکم

    شکریہ بلال بھائی تفصیلی جواب کے لیے ۔

    خرم ، آپ کا بھی شکریہ ۔ ہمارے پڑوس میں ایک خاتون تھیں ان کا بھی یہی حال تھا کہ غصہ میں کھانا زیادہ کھایا کرتی تھیں ، اب آپ نے بھی مثال قائم کر دی 🙂
    [rq=103100,0,blog][/rq]ہفتہ بلاگستان منایا جائے ۔ ۔

اپنا تبصرہ تحریر کریں

اوپر