آپ یہاں ہیں
صفحہ اول > bloggers > امریکہ کے اردو بلاگرز کی ملاقات

امریکہ کے اردو بلاگرز کی ملاقات

چند دن پہلے کراچی کے بلاگران کی عید ملن سے متاثر ہو کر امریکہ کے بلاگرز نے بھی ہنگامی طور پر ایک میٹنگ بلوانے کا فیصلہ کیا۔ محب علوی کو پہلے تو کراچی کے بلاگرز کی ملاقات کا علم ہی نہ تھا۔۔۔لیکن جونہی اس ملاقات کے بارے میں انھیں بتایا گیا تو ان کو ایسا جوش آیا کہ کل رات چوٹی کے بلاگران کی تاریخ ساز ملاقات رکھ ہی لی۔

اس ملاقات کی مکمل تفصیلات ابھی تک منظر نامہ تک نہیں پہنچیں۔ لیکن ہمیں اس ملاقات کی ریکارڈنگ ابنِ سعید سے حاصل ہو گئی ہے. ملاقات میں چار اردو بلاگرز نے شرکت کی، اور ابنِ سعید جو کہ اردو بلاگر تو نہیں ہیں لیکن اردو کمیونٹی میں ان کا بہت نام ہے اور اردو محفل کے رکن بھی ہیں، شامل تھے. اردو بلاگرز میں سے بدتمیز، خرم، راشد کامران، محب علوی نے شرکت کی. راشد کامران اور ابنِ سعید بذریعہ فون شریک رہے. آپ اس میٹنگ کی گفتگو سنئیے.

پہلا حصہ:

دوسرا حصہ:

21 تبصرے:

  1. بھئی ہم تو راشد بھائی کے انداز بیان پر فدا ہو گئے. اتنے مدھم سروں میں اور اتنے کم الفاظ میں اتنی ساری باتیں کہہ جاتے ہیں کہ ہم تو مارے حیرت کے واہ واہ کہنے کی بھی تاب نہیں رکھتے. خاص کر اردو بلاگنگ کے حوالے سے جن معاشرتی ضرورتوں کی طرف انھوں نے اشارہ کیا اس پر ہم نے کبھی غور ہی نہیں کیا. ہماری سوئی تو تکینیکی مسائل کے ارد گرد ہی گھومتی رہتی ہے.

  2. بالآخر سوا گھنٹے کی ‘جبری مشقت’ ختم ہوئی اور پوری ریکارڈنگ سن لی۔ ماشآ اللہ، اردو بلاگنگ کے موضوع پر بہت اچھی گفتگو ہوئي۔ البتہ چند معاملات پر زیادہ گفتگو ہونی چاہیے تھی جیسا کہ اجتماعی بلاگ اور بلاگنگ کیوں کی جائے؟ وغیرہ پر۔
    اردو تھیمز کو اہمیت سے زیادہ وقت دیا گیا۔ اردو بلاگنگ کا سب سے بنیادی مسئلہ تھیمز نہیں بلکہ بہت سارے ایسے افراد کی عدم موجودگی ہے جو اردو میں بلاگنگ کی صلاحیت رکھتے ہیں لیکن بلاگنگ نہیں کرتے۔ اگر ایسے افراد کو اردو بلاگنگ کی جانب گھسیٹنے کے لیے کوئی لائحہ عمل وضع کیا جاتا تو بہت بہتر ہوتا۔
    تھیم اردوانے کے حوالے سے تکنیکی ماہرین کی شکایات سامنے آئیں ضرورت اس امر کی ہے کہ جو اہم باتیں بیان کی گئیں انہیں “تھیم اردوانے کے لیے رہنما اصولوں” کے نام سے ایک مقالے میں جمع کیا جئے۔
    تکنیکی سہولیات کے لیے پلیٹ فارم کی موجودگی کا مطالبہ بھی کیا گیا، جو مجھ ناچیز کے خیال میں غیر ضروری تھا۔ اس سلسلے میں اردو ماسٹر کی صورت میں ایک پلیٹ فارم موجود ہے جو برادر ساجد اقبال و عمار ضیاء کی مصروفیات کے باعث غیر فعال ہے۔ محض اسے فعال کرنے کی ضرورت ہے۔
    میلنگ لسٹ کے لیے کام کرنے کی ذمہ داری کراچی عید ملن میں عمار نے لی تھی۔ ان کی مصروفیات بہت زیادہ ہیں، لیکن ہو سکتا ہے کام مکمل کر چکے ہوں۔ مزید معلومات کے لیے ان سے رابطہ کیا جائے، بلکہ میں آج ہی ان سے رابطہ کرتا ہوں۔ ماوراء اور عمار کی مصروفیات کے باعث کچھ ماہ سے منظرنامہ بہت زیادہ غیر فعال ہو گیا ہے۔ اس لیے ضرورت اس بات کی ہے کہ اردو بلاگرز خود آگے بڑھ کر اس ذمہ داری کو قبول کریں۔
    تھیم کے بجائے تحریر کے مواد کو زیادہ اہمیت دینے کے حوالے سے جن صاحب نے رائے دی وہ بہت اہم تھی۔ واقعی اس وقت گوناگوں موضوعات پر تحاریر کی زیادہ ضرورت ہے۔
    بحیثیت مجموعی امریکی عید ملن بہت اچھی رہی۔ اگر کراچی عید ملن کی ریکارڈنگ کر لی جاتی تو سننے والوں کے کان پک جاتے کہ کراچی میں عید ملن کا دورانیہ کل ملا کر 6 گھنٹے تھا :hayn:

    بلاگنگ سے ہٹ کر:
    ایک بڑی لرزتی ہوئی آواز ہے، گویا کوئی 60 کے پیٹے میں موجود بزرگ بول رہے ہیں، یہ کون تھے؟ آخر میں بڑی دعائیں کر رہے تھے “ماشآ اللہ اتنے سارے نوجوان” 😀
    اور یہ جملہ کس نے کہا تھا “کنپٹی پر بندوق رکھ کر بلاگنگ نہیں کروائی جا سکتی کہ بلاگ نہ لکھا تو روٹی نہیں ملے گی” 😀
    سعود بھائی نے بلاگ نہ لکھنے کا بہانہ خوب بنایا کہ بلاگ کے بجائے بلاگر پیدا کرنا چاہ رہے ہیں 🙂 لگتا ہے آپ نے شادی بھی اسی لیے کی ہے 😀

  3. اس ملاقات کا عنوان ”ہنسی کا گول گپہ“ ہونا چاہئے۔۔۔
    باتیں کم اور ہنسنے کی آوازیں زیادہ ہیں۔۔۔ کچھ بلاگر تو ”ہائی“ لگ رہے تھے۔۔۔ (مذاق)
    راشد کامران کی آواز ان کی تحریر اور شخصیت کے عین مطابق ہے
    باقی کے بارے میں میری رائے سختی سے محفوظ ہے
    :grins:

  4. ماشاءللہ میٹنگ کافی اچھی رہی اور سعود نے تو لگتا ہے اگلی پچھلی کسر نکالی ہے بولنے کی :haha:

    ذرا پیچھے سے جو آواز آ رہی تھی وہ المشہور بدتمیز کی تھی اور سعود کے اس جملے کو جو خرم نے پکڑا ہے تو محفل لوٹ لی ہے

    میں شروع سے اردو پروگرامر پیدا کرنا چاہتا تھا

    تمام صاحبان علم و دانش کے لیے یہ اشارہ ہی کافی ہے.

    بہت سا کام ایک شکل میں ہو چکا ہے جو چند وجوہات کی وجہ سے میں سامنے نہیں لا رہا اسے تقریبا ایک ماہ میں شکل دے کر بہت سے مطالبے پورے کر دوں گا. بدتمیز اس بارے میں جانتا ہے اور بدتمیز سے خاموشی کی درخواست ہے 🙂

  5. بہت خوب. کچھ تو کام چلا…

    ابن سعید کے تجویز کردہ ان تین موضوعات کے حوالے سے منظر نامہ کے پلیٹ فارم پر ضرور کام کیا جانا چاہیے.
    اردو بلاگنگ سے متعلقہ عمومی سوالات
    اردو بلاگ تھیمز کا ذخیرہ
    اردو بلاگر کی میلنگ لسٹ

  6. آڈیو میں ایک صاحب نے ذکر کیا کہ منظر نامہ سست روی سے لوڈ ہوتا ہے. اس کی وجہ منظر نامہ پر چلنے والے پلگ ان ہیں. دوسرا منظر نامہ پر اسنیپ شاٹ نامی جو چیز نصب ہے یہ بھی صفحے کو لوڈ ہونے میں سست کردیتی ہے اورہر لنک پر یہ عجیب سے چیز جو کھولتی ہے یہ بہت ہی بری لگتی ہے اور کوئی بھی اچھا ویب ڈیزائنر اس کے استعمال کا مشورہ نہیًں دیگا. مزید یہ کہ منظر نامہ گوگل کروم پر پورا نظر نہیں آتا.

    اردو بلاگنگ کے حوالے سے میں نے بھی ایک پوسٹ لکھی جسے منظرنامہ کو ارسال کررہا ہوں.

  7. تمام احباب تھوڑا سا انتظار کر لیں تو بہت سی تجاویز کو پہلے ہی عملی شکل دی جا چکی ہے اور چند وجوہات کی وجہ سے میں اس پلیٹ فارم کا ذکر نہیں کر رہا جہاں یہ سب ماضی میں ہو چکا ہے .

    کافی چیزیں میرے ذہن میں تھیں اور انہیں میں نے بدتمیز اور قدیر رانا کے ساتھ مل کر عملی جامہ پہنایا تھا مگر کچھ غلطیوں اور رابطے کے فقدان کی وجہ سے کام کو روکنا پڑا.

  8. ریحان بھائی ٹیکنالوجی کا استعمال فی الحال انتہائی بنیادی سطح پر کیا گیا تھا اور اگر ہم نے تصاویر لگا دیں تو پھر آپ لوگ تفصیل پڑھے بغیر ہی بھاگ لیں گے (اگرچہ مجھے شک ہے کہ بدتمیز یہ بدتمیزی کہیں انجام ہی نہ دے دیں)۔
    فہد بھائی وہ جملہ جو آپ نے پکڑا وہ اس ناچیز سے خطا ہوا تھا 😀
    ابھی بھی میرے خیال میں جو گفتگو ہوئی اس کا لُب لباب ایک پوسٹ میں مہیا کرنے کی ضرورت ہے تاکہ بات کو آگے بڑھایا جاسکے۔ میرا حسن ظن ہے کہ بدتمیز اسی لئے خاموش ہیں کہ وہ یہ کام کررہے ہیں۔ دیکھئے اگلے ایک دو روز میں ان کی پٹاری سے کیا برآمد ہوتا ہے۔ 😀

  9. ایک بہت ہی اچھی تقریب رہی اور امید ہے کہ آئندہ ان تجربات کو سامنے رکھتے ہوئے زیادہ بہتر طریقے سے اجلاس کی کاروائی نشر کی جائے گی.

    سعود صاحب کے ہندوستانی لہجے کی اردو نے تو خوب رس گھولا لیکن ساتھ ساتھ جن تیکنیکی معاملات کی طرف انہوں نے اشارہ کیا انہیں ہر بلاگر کو سوچنا اور سمجھنا چاہیے خاص کر منظرنامہ، اردو ماسٹر یا اسطرح کی دوسری کمیونٹی ویب سائٹس پر تیکنیکی مسائل نہیں ہونے چاہیے.. خاص کر منظرنامہ شاید فائر فاکس اور آئی ای کے علاوہ کسی دوسرے ڈیسک ٹاپ اور موبائل براؤزر میں پوری طرح نہیں کھل پاتی.

    بی ٹی نے ایک بہت اہم مسئلے کی طرف نشاندہی کی کہ اردو بلاگرز وقت کے ساتھ ساتھ اپنی بنیادی تیکنیکی مہارت میں اضافہ نہیں کرتے اور ہر بار ایک ہی مسئلہ ان کی بلاگنگ میں رکاوٹ بنتا رہتا ہے جس کی طرف سب کو توجہ دینے کی ضرورت ہے کیونکہ ایک نان فار پرافٹ پراجیکٹ پر کل وقتی سپورٹ فراہم کرنا کسی طور ممکن نہیں.

    دوسری بات جو ابوشامل صاحب نے اپنے تبصرے میں لکھی اور میں نے بھی اس پر زور دیا کہ پہلے سے موجود کمیونٹی فورمز کو منظم کیا جائے بجائے اس کے کہ اس جیسی کوئی دوسری سروس شروع کی جائے اور ایک گیٹ وے ویب سائٹ بنا کر اردو بلاگنگ کی تمام کمیونٹی ویب سائٹس کو لنک کردیا جائے.

    منظرنامہ پر لکھنے والوں کی کمی کی شکایت بدستور برقرار ہے بلکہ اب تو منظرنامہ نے لکھنے کی دعوت دینا بھی قریب قریب بند کردی ہے. اگر ہفتہ بلاگستان کی طرز پر منظر نامہ پر تمام بلاگر وقت نکال کر لکھیں تو اردو میں اجتماعی بلاگنگ کا بنیادی خاکہ بھی وضع ہوسکے.

  10. ایک تو اس دن میں نے کریلے کی سبزی کھا رکھی تھی اس لئے آواز میں کڑواہٹ کافی تھی. اس پر طرہ یہ کہ 60 فیصد احباب نے جن لذیز کھانوں کے ساتھ انصاف کیا تھا اس کی تفصیل بھی پہلے ہی بتا دی جس کریلا کو نیم پر چڑھا دیا. 🙂

    خیر ابھی رات ہی اجتماعی بلاگنگ کے حوالے سے ایک عدد سافٹوئیر وکی بلاگ کا ذکر اردو محفل میں کیا ہے http://www.urduweb.org/mehfil/showthread.php?t=26012 . احباب اس کو بھی ایک نظر دیکھ لیں. شاید چوہے میں ابھی تھوڑی بہت جان باقی ہو جو پہاڑ کھودنے کے بعد نکلا ہے.

    اگر میں اس ویک اینڈ پہ فرصت نکال سکا تو ماورہ بٹیا سے کہتا ہوں کہ وہ منظر نامہ پر میری اردوائی ہوئی ایک سادہ سی تھیم چڑھا کر دیکھیں. امید ہے کہ اس میں لے آؤٹ بگڑنے اور براؤزر انکمپیٹبلٹی جیسے مسائل نہیں ہونگے. کیوں کہ وہ تھیم جاوا اسکرپٹ فری ہے. یہ اور بات ہے کہ تبصرے کے لئے جاوا اسکرپٹ کا استعمال کرنا ہوگا. ویسے با وثوق ذرائع سے پتہ چلا ہے کہ منظر نامہ کے لئے تھیم پر کام ہو رہا ہے.

    ہائپر لنکس کا ستیا ناس کرنے والا پلگ ان مجھے بھی پسند نہیں. اس لئے ایک عدد منفی ووٹ مجھ غیر بلاگر کی جانب سے بھی. 🙂

  11. مجموعی طور پر یہ ایک اچھی ملاقات رہی مجھے اس میں ایک مشورہ بہت اچھا لگا کہ کوئی ایسا اسکریپٹ تیار کرکے تمام بلاگ میں ڈالا جائے کہ کوئی نہیں پیغام ہو وہ تمام بلاگز پر دیکھے

اپنا تبصرہ تحریر کریں

اوپر