آپ یہاں ہیں
صفحہ اول > شناسائی ، علی حسان ، اس طرف سے > علی حسان سے شناسائی

علی حسان سے شناسائی

منظرنامہ کے فعال ہونے کے ساتھ ہی سلسلہ شناسائی کا آغاز کردیا ہے ۔
آج ہمارے مہمان ہیں اردو بلاگ ” اس طرف سے “ کے عنوان سے بلاگ لکھنے والے علی حسان ۔
باقاعدگی سے بلاگ تحریر کرتے ہیں اور نہایت ہی اعلیٰ انداز تحریر کے مالک ہیں ۔
آئیں ان سے سوال و جواب کا آغاز کرتے ہیں ۔

خوش آمدید !

کیسے مزاج ہیں ؟

@الحمد اللہ

آغاز میں ہم آپ کے بارے میں جاننا چاہیں گے۔

@ میرا نام علی ہے اور اس طرف سے بلاگ پر بلاگیاں جھاڑتا ہوں ۔

آپ کی جائے پیدائش کہاں ہے ؟ اور حالیہ رہائش کہاں ہے ؟

@میری پیدائش ملتان کی ہے اور آج کل بسلسلہ تعلیم یورپ کے ایک چھوٹے سے ملک ایسٹونیا میں قیام پذیر ہوں ۔

اپنی تعلیم  اور خاندانی پس منظر کے بارے میں کچھ  بتائیں ؟

@ تعلیم سے مراد ڈگری ہے تو بے شمار ہیں اور اگر علم ہے تو ککھ نہیں۔ آج کل ایک اور ڈگری جس کو پی ایچ ڈی کہتے ہیں کر رہا ہوں۔ ہاں خاندانی پس منظر ہی واحد خوبی ہے کہ سید گھرانے میں پیدا ہوا ہوں یعنی بس اللہ میاں نے کی طرف سے اچھائی ہوئی ورنہ ہم نے کوئی کسر نہیں چھوڑی ۔

لفظ ” بلاگ “ سے کب شناسائی حاصل ہوئی ؟

@میرے ماموں نے 2006-07 کے لگ بھگ کہا تھا کہ آپ بلاگ کیوں نہیں لکھتے آج کل بڑے مقبول ہیں امریکہ میں۔ وہ کمپیوٹر انجینئر ہیں اور اس وقت sisco میں نوکری کر رہے تھے لہذا وہ نیٹ کے ٹرینڈ جانتے تھے ۔

اردو بلاگنگ کی جانب کیسے آنا ہوا ؟ اور بلاگنگ کا آغاز کب کیا ؟

@لکھنے کی لت دسویں سے لگی ہے اور تھوڑا بہت چلتا رہا آخر ماموں کی نصحیت پر 2009 میں بلاگ ڈھونڈنے اور سمجھنے شروع کیے کہ یہ ہیں کیا بلا؟ ۔

کیا بلاگ بنانے سے پہلے اردو بلاگر ز کے بلاگ پڑھتے تھے ؟ کس سے متاثر ہوئے ؟

@کسی کو بھی نہیں جانتا تھا۔ بلکہ پہلے میں نے پہلے ورڈپریس پر بنایا تھا پھر سوچا یار یہ ورڈپریس ہے بلاگ تو نہ ہوا پھر ختم کر کے بلاگر پر آیا۔بہت سرچ کیا کہ کوئی بلاگر ملے جو اردو میں لکھے آخر جب میں لکھنا چالو کر چکا تھا تو ڈفر صاحب کے بلاگ سے آگاہی حاصل ہوئی اور ان کے بتانے پر سیارہ اور دوسرے بلاگروں سے آشنائی ہوئی البتہ یہ آشنائی ابھی بھی کسی کے ساتھ اس حد تک نہیں پہنچی کہ فرار پر کام آجائے ۔

بلاگنگ کے آغاز میں مشکلات کا سامنا رہا ؟

@نہیں کوئی خاص نہیں۔ میرا شروع سے ہی فوکس لکھنے پر رہا ہے بلاگ کی شکل صورت سے میرا کوئی لینا دینا نہیں جیسا بھی الٹا سیدھا بنا میں نے لکھنا جاری رکھا اور اب تو اللہ بھلا کرے سوکر نامہ والے علمدار صاحب کا کہ ٹیکنکل کام کا بیڑہ انہوں نے ہی اٹھا لیا ہے میرا بلاگ کا ۔

آپ  کا انداز تحریر نہایت اعلیٰ ہوتا ہے ، کسی خاص مصنف کو پڑھتے ہیں ؟ نیز کون سے مصنفین پسند ہیں ؟

@اپنے وقت پر کسی کو نہیں بخشا منٹو سے خواتین ڈائجسٹ سب کو رگڑا البتہ اب  اپنے پسندیدہ مصنفین کو ترجیح دیتا ہوں۔ اشفاق احمد، ممتاز مفتی، ابن صفی،  منشا یاد، عبد اللہ حسین، مستنصر حسین تارڈ ناول  کی حد تک، مظہر الاسلام ۔ ان کی کوئی بھی تحریر چھوڑی نہیں اور اب مل جائے تو ہر وقت پڑھنے کو تیار رہتا ہوں۔

آپ بلاگ کو کس حد تک اہمیت دیتے ہیں ؟ کیا یہ آپ کی شخصیت کی عکاسی کرتا ہے؟

@شخصیت کی عکاسی وکاسی کوئی نہیں۔ بس لکھنے کی لت پڑی ہے اور یہاں پر دس بارہ پڑھنے والےبھی ہیں تو لکھ رہا ہوں ۔

آپ بلاگ پر کن موضوعات پر زیادہ لکھنا پسند کرتے ہیں ؟

@میرا پہلا پیار تو افسانہ نگاری ہے لیکن جب بلاگ لکھنا شروع کیا تو پتہ نہیں تھا کہ افسانے بھی بلاگ پر لکھے جا سکتے ہیں لہذا مزاح لکھنا شروع کیا  اور دو سال اسی کو چلایا لیکن  چند لوگوں کے اصرار پر افسانے بھی اب شایع کرنا شروع کر دیے ہیں  جبکہ میں  ذاتی طور پر بلاگ کو فقط مزاح تک محدود رکھنا چاہتا تھا۔

آپ تحاریر کی تعدادبڑھانے پر یقین رکھتے ہیں یا پھر صرف  معیاری تحاریر کو شائع کرنے پر یقین رکھتے ہیں ؟

@نہ اس پر ، نہ اس پر۔ بس جب تک دماغ میں آ رہا ہے لکھ رہا ہوں ۔

آپ کی نظر میں معیاری بلاگ کیسا ہوتا ہے ؟

@ مجھے آج تک اس معیار نامی چڑیا کا دیدار نہیں ہوا۔ جب آپ معیاری کی تعریف ہی نہیں کر سکتے تو معیاری بلاگ کہاں سے آئے گا۔ اصل میں میرے نزدیک ہر بندے کا اپنا معیار ہے لہذا یاد رکھیں   ہر چہرے کی طرح ہر بلاگ بھی کسی کا محبوب ہو سکتا ہے ۔

آپ نے اپنے بلاگ کا نام ” اس طرف سے “ ہی کیوں  رکھا ؟

@یار اصل میں تو میں بھول گیا تھا کیوں رکھا تھا J لیکن پھر  بعد میں اسی کے مطابق ٹیگ لائن سوچ کر اب میں کہہ سکتا ہوں کہ اس طرف سے  دنیا کو دکھانے کی کوشش ہے جس طرف سے میں دیکھتا ہوں۔

کیا آپ سمجھتے ہیں کہ بلاگنگ سے آپ کو کوئی فائدہ ہوا ہے؟ یا کیا فائدہ ہوسکتا ہے؟

@ بالکل جی فائدہ ہوا ہے لکھنا امپروو کیا ہے میں الٹی سیدھی باتیں سوچنے کی بجائے ایک مثبت کام میں لگا ہوں بے شک آپ کو ہر ہفتے عذاب سے گزرنا پڑتا ہے لیکن  میرا تو بھلا ہو گیا ہے ۔

اگر آپ کو اردو کے ساتھ تعلق بیان کرنے کو کہا جائے ، تو اس کو کیسے بیان کریں گے ؟

@ہائے ہائے ہمارے تو دل کے اندر ہے جی اردو ۔ بس دن رات اردو کے غم میں کھپ کھپ کر جان ہلکان کی ہوئی ہے ہم نے۔

آپ کیا سمجھتے ہیں کہ اردو کو وہ مقام ملا ہے، جس کی وہ مستحق تھی؟

@مٹی ملی ہے۔ بے چاری خوار ہو گئی اتنا تو ہم خوار نہیں ہوئے جتنی اس کے ساتھ ہوئی۔

کبھی ایسا خیال ذہن میں آیا کہ ، میں بلاگنگ کیوں کررہا ہوں ؟ مجھے چھوڑ دینی چاہیئے کیونکہ اس کے لیے بہت محنت اور وقت کی ضرورت ہے ؟

@ہاں جی بس کبھی کبھار بور ہو جاتا ہوں لیکن بلاگنگ پھر بھی  چھوٹ جائے لیکن لکھنا شاید نہ چھوڑ سکوں۔

آنے والے پانچ سالوں میں اپنے آپ کو اور اردو بلاگنگ کو کہاں دیکھتے ہیں؟

@اپنے آپ کو ماؤنٹ ایورسٹ پر دیکھتا ہوں اور اردو بلاگنگ کو بحیرہ عرب میں دیکھتا ہوں۔اردو بلاگر کے حساب سے مجھے بھی بحیرہ عرب میں  ہونا چاہیے تھا لیکن یہاں پر بحیرہ بالٹک ہے اور اس میں ہر وقت برف جمی ہوتی ہے لہذا ہمارا ڈوبنا ذرا مشکل ہے۔ المختصر اور الجامع کوئی مستقبل نہیں اردو بلاگنگ کا ۔

بلاگ کے علاوہ  انٹرنیٹ پر دیگر کیا مصروفیات ہیں؟

@فیس بک پر زوو کی گیم کھیلتا ہوں، فٹ بال کے میچ دیکھتا ہوں  بہت سارے کام ہیں۔

کسی بھی سطح پر اردو کی خدمت انجام دینے والوں اور اردو بلاگرز کے لیے کوئی پیغام؟

@ ہمت ہے بھائی آپ لوگوں کی ۔۔

آپ کی زندگی کا مقصد کیا ہے ،کوئی ایسی خواہش جس کی تکمیل چاہتے ہوں؟

@لاکھوں کروڑوں خواہشیں تکمیل کی آرزو میں مچل رہی ہیں ۔


کچھ سوال ذرا ہٹ کے۔۔۔


پسندیدہ:

1۔ کتاب ؟

@ سفر در سفر ۔ اشفاق احمد

2۔ شاعر ؟

@بہت سارے ۔ غالب، ناصر کاظمی، فیض، ابن انشا، افتخار عارف،  منیر نیازی، سلیم کوثر، مجید امجد، گلزار، وغیرہ وغیرہ

3۔ شعر ؟

@ مختلف اوقات میں مختلف کوئی ایک نہیں خاص

4۔ رنگ ؟

@پھیکے پھیکے اڑے اڑے بدنما

5۔ کھانا ؟

@ چٹ پٹا اور خوب

6۔ موسم ؟

@ٹھنڈ

7۔ ملک ؟

@ویسے تو پاکستان  پر اب ایسٹونیا بھی اچھا لگتا ہے۔ پر پاکستان پاکستان ہے


غلط /درست:


1۔ مجھے بلاگنگ کی عادت ہوگئی ہے ؟

@ہاں جی

2۔ مجھے اکثر اپنے کئے ہوئے پر افسوس ہوتا ہے؟

@کم کم

3۔ مجھے کتابیں پڑھنے کا شوق ہے ؟

@جی

4۔ مجھے شاعری کا شوق ہے ؟

@تھا

5۔ میں ایک اچھا دوست ہوں ؟

@نہیں

6۔ مجھے جلد ہی غصہ آجاتا ہے ؟

@ہاں جی

منظرنامہ کو دوبار ہ سے فعال کیا گیا ہے ، اس اقدام کو کیسا دیکھتے ہیں ؟ اور منظرنامہ کے لیئے کوئی تجویز؟

@ بہت ہی عمدہ کام ہے اور تجویز  یہی ہے کہ ہمت رکھیں اور کام جاری رکھیں ۔


اپنا قیمتی وقت نکال کر منظرنامہ کو انٹرویو دینےکے لیئے آپ کا بہت بہت شکریہ

@وعلیکم شکریہ ۔ ویسے ہم نے انٹرویو دینا تو نہیں تھا بس مروت میں آگئے کہ آپ کہیں گے نخرے دیکھو  منظر نامہ میں مدد تو مدد انٹرویو دینے سے انکاری ہیں ۔

محمد بلال خان
محمد بلال خان کمپیوٹر سائنس کے طالب علم ہیں۔پیشے کے لحاظ سے ویب ڈویلپر ہیں۔ عام موضوعات کے علاوہ ٹیکنالوجی اور انٹرنیٹ سے متعلق سافٹ ویئر کے بارے میں بلاگ نامہ کے عنوان سے اردو بلاگ لکھتے ہیں۔ منظرنامہ انتظامیہ کا حصہ ہیں۔
http://www.mbilalkhan.pk/blog

20 تبصرے:

  1. سر مائنڈ نہ کریں تو کہوں گا کہ انٹرویو کو مگروں ہی لایا گیا ہئ

    جناب میرے پسندیدہ ترین بلاگرز میں سے ہیں
    خاص طور پہ ان کی افسانہ نگاری کی تعریف کرنا چاہوں گا
    مجھے بہت پسند ہیں
    اسٹیشن کہانی اور محبت اور اس کے نتیجے میں لگنی والی سپلیاں
    بہت بار پڑھا ہے اور ابھی بھی شوق سے پڑھتا ہوں

    بلاگ پر صرف مزاح ہی کیوں افسانہ نگاری پر بھی زیادہ فوکس کیجئے نا

    اور تھوڑا بہت جان کر خوشی ہوئی

    خوش رہیں

    1. @ سعد ملک
      آپ کی محبت ہی ہے جو چار سال گزر گئے بلاگنگ میں
      افسانوں کی کتاب زیر طبع ہے
      باقی انٹرویو کے لیے جو سوالات دیے گئے ان کو پورا کرنے کی کوشش کی میں نے مزید تفصیل تو تب ہی ہو سکتی ہے کہ اگر دوبدو ملاقات ہو۔ ہم تو ایسے بندے ہیں جب تک کوئی خاص طور پر نہ کہے کہ پورا نام بتائیں ہم پورا نام نہیں بتاتے

  2. بہت اچھا لگا کہ ایک بار پھر ہمیں اردو بلاگرز سے شناسائی کا موقع مل رہا ہے۔ اور شروعات بھی ایسے بلاگرز سے ہوئی کہ جناب کیا کہنے۔

    علی بھائی! آپ کی تحاریر سے لگتا تو نہیں کہ اردو بلاگنگ کا مستقبل تاریک ہے! تو پھر ایسا کیوں سوچتے ہیں کہ “المختصر اور الجامع کوئی مستقبل نہیں اردو بلاگنگ کا” ۔ ۔ ؟

    1. اسد بھائی اس لیے کہ کم لوگ ہیں جو جب مصروف ہوجاتے ہیں تو بلاگنگ کے لیے وقت نکالیں
      یعنی فارغ ہیں تو بلاگنگ کریں ورنہ محض اس کو اضافی چیز سمجھتے ہیں
      بس اسی لیے سوچتا ہوں کہ اللہ نہ کرے کہ ایسے ہی آنا جانا لگا رہے گا اور کوئی بڑا نام سامنے نہ آ سکے گا
      باقی میری خوش نصیبی کہ آپ بھی میرا بلاگ پسند کرتے ہیں

  3. علی بهائی کے بلاگ کی طرح انٹرویو بهی دل چسپ رہا .میں بهی ان صاحب کا بلاگ پابندی سے پڑهتی ہوں . بہت مختضر انٹرویوں تها.کچه اور بهی سوال کئے جانے چاہئے .اللہ علی بهائی کو خوش رکهے.آمین

  4. خوشی ہوئی آپ کے بارے جان کر۔
    صرف ایک سوال، بلاگنگ کی وجہ سے آپکو لگتا ہے کہ آپکی لکھائی میں بہتری آئی ہے، پھر بھی آپ بور ہو چکے ہیں اور شاید بلاگنگ ترک کر دیں گے مگر لکھنا نہیں چھوڑیں گے۔
    ایسا کیوں؟

    1. عمر بھائی بس چار سال ہو گئے مزاح لکھتے لکھتے کبھی کبھی دل کرتا ہے چھوڑو کیا مصیبت گلے ڈالی ہے کہ ہر ہفتے پوسٹ کرو۔
      کہانی لکھنا یا کچھ اور لکھنا کایہ ہے جب آئیڈیا آیا لکھ لیا یہ نہیں کہ فلاں دن تک ہر حال میں پورا کرنا ہے
      بس سوچ ہے ایک
      امید ہے بات سمجھے ہوں گے

  5. بھائی ایک بے وزن شعر عرض کیا ہے
    ت
    م درد چھپا سکو گے نا ایسے مسکراکر
    ہم کو عبور حاصل ہے درد کی ذباں پر
    سکندر حیات بابا
    آپ بندے کافو مذاقیہ ہو .لیکن ہمیں آپ کا مذاق ہی نہیں یہ بھی اچھا لگتا ہے .
    کے آپ بندے ہو
    🙂

  6. سوالات کے جوابات کے بعد تبصروں کے جوابات دینے کا بھی حکم صادر ہوا تو جواب دے دیے۔
    اپنے بارے میں مختصراً بات کرنے کی عادت ہے تو جو جواب پوچھے گئے ان کے جواب دے دیے باقی مزید جن کو تفصیل جاننے کا ارادہ ہوعنقیرب بلاگ پر تفصیل سے ایک پوسٹ آنے والی ہے امید ہے وہاں آپ لوگوں کی شکایت دور ہو جائے گی

اپنا تبصرہ تحریر کریں

اوپر