آپ یہاں ہیں
صفحہ اول > تازہ تحاریر > اجمل ملک سے شناسائی

اجمل ملک سے شناسائی

منظرنامہ کے سلسلہ شناسائی کے آج کے مہمان ہیں جناب ”اجمل ملک “ صاحب آپ سینئر صحافی ہیں اور فیصل آباد سے تعلق رکھتے ہیں۔ آپ ایکسپریس نیوز سے وابستہ ہیں اور اردو بلاگنگ بھی کرتے ہیں۔ بلاگ یہاں کلک کرکے پڑھ سکتے ہیں۔

خوش آمدید !

کیسے مزاج ہیں ؟

@ الحمد اللہ ۔ اللہ تعالی کے اتنے احسانات ہیں کہ شمار نہیں لا سکتا ۔

اپنے بارے میں کچھ بتائیں ؟

@ میں انتہائی سادہ انسان ہوں۔والدین اور بیوی بچوں سے محبت کرتا ہوں۔محنتی ہوں۔رزق حلال کھاتاہوں۔ جھوٹ سے بچنے کی کوشش کرتا ہوں ۔پکا مسلمان ہوں۔پاکستان کو اللہ تعالی کا تحفہ سمجھتا ہوں۔وطن سے محبت میرا ایمان ہے۔ میں زمانے کے لبوں پر خوشی دیکھنے چاہتا ہوں۔

آپ کی جائے پیدائش کہاں ہے ؟ اور موجودہ رہائش کہاں ہے ؟

@ مقام پیدائش اور مقام رہائش دونوں فیصل آباد ہیں۔

اپنی تعلیم، پیشہ اور خاندانی پس منظر کے بارے میں کچھ بتائیں ؟

@پاکستان سٹیڈیز میں ایم ایس سی کی ہے اور ایم اے انگلش کیا ہے۔ میرا پیشہ صحافت ہے اس شعبہ میں اس لئے آیا ہوں کہ میرا رزق یہاں لکھا تھا۔آج کل ایکسپریس نیوز فیصل آباد کا بیورو چیف ہوں۔ لیکن میرا خاندانی پیشہ تجارت ہے ۔ فیصل آباد چونکہ لان اور لٹھے کا شہر ہے۔اس لئے ہم بھی کپڑے کے کاروبار سے وابستہ ہیں۔

اردو بلاگنگ کی طرف کب اور کیسے آنا ہوا ؟ آغاز کب کیا ؟

@ شائد 2014 رخصت ہو رہا تھا جب اردو بلاگرز کے’’باغبان‘‘۔مصطفی ملک صاحب جو’’گھریلو باغبانی‘‘کےعنوان سے ’’بلاگ بانی‘‘ کرتے ہیں۔ انہوں نے مجھےمشور ہ دیا کہ میں لکھنا شروع کروں۔اس سےقبل روزنامہ ایکسپریس کےرنگین صفحات پرمیرے کئی آرٹیکلز چھپ چکے تھے۔وہ سارے آرٹیکلز سماجی مسائل سے متعلق تھے۔زمین پہلے سے ہموارتھی اس میں بلاگنگ کا بیج بویا گیا تو پنیری پھوٹ پڑی ۔ میرے ویب پیج کے باغبان بھی مصطفی ملک صاحب ہی ہیں۔ الف ب انہی سےسیکھی ہے۔مجھے لگتا ہے میں ’’پ‘‘تک پہنچ گیا ہوں۔

کیا مراحل طے کیے آغاز میں اور کس قسم کی مشکلات پیش آتی تھیں ؟

@ مرحلہ ایک ہی تھا کہ بلاگ کا صفحہ کس طرح بنانا ہے۔ فونٹ کیساہوگا۔ لے آوٹ کیسا منتخب کرنا ہے۔اکاونٹ کیسے بننا ہے۔ بس زینے پر پہلا قدم رکھا توشعور کے کئی بند دریچے کھلے۔دوسرا قدم خودبخوداٹھ گیا ۔ لیکن ابھی عشق کے امتحاں اور بھی ہیں۔

بلاگنگ شروع کرتے ہوئے کیا سوچا تھا؟ صرف بلاگ لکھنا ہے یا اردو بلاگنگ کو فروغ دینے کا مقصد پیش نظر تھا ؟

@ سچ تو یہ ہے کہ فروغِ اردوکی طرف تب رتی برابر بھی دھیان نہیں تھا۔ذہن پر بلاگ لکھنے کی ایسی مستی چھائی تھی جیسی کسی بچے کومن پسند کھلولنے ملنے پر چھا جاتی ہے۔ جب لکھنا شروع کیا تو شدت سے احساس ہو ا کہ مجھے پڑھنا چاہیے۔

کن بلاگرز سے متاثر ہیں اور کون سے بلاگز زیادہ دلچسپی سے پڑھتے ہیں ؟

@ مصطفی خاور، یاسر خواہ مخواہ جاپانی۔عمیر محمود۔ڈفرستان اور مصطفی ملک۔ وغیرہ کو پڑھتا ہوں۔

لفظ “ بلاگ ” سے کب شناسائی حاصل ہوئی ؟

@ پہلی بار روزنامہ دنیا میں پڑھا تھا ۔رنگین صفحات پر مختلف شخصیات کے بلاگز مختلف ناموں کے ساتھ چھپتے تھے۔یوں سمجھیئے کہ اخبار بینی نے مجھے بلاگ سے آشنا کیا۔

اپنے بلاگ پر کوئی تحریر لکھنی ہو تو کسی خاص مرحلے سے گزارتے ہیں یا لکھنے بیٹھتے ہیں اور لکھتے چلے جاتے ہیں ؟

@ سوال سے بھی لگتا ہے اور میرا ذاتی مشاہدہ بھی یہی ہے کہ لکھنے بیٹھنے اور لکھتے ہی چلے جانادو الگ الگ کیفیات ہے۔لکھا تو بہت کچھ جا سکتا ہے لیکن لکھتے ہی چلے جانا شائد کوئی ماورائی علم ہے۔یہ ایسی کیفیت ہے جس میں الفاظ من و سلویٰ کی طرح اُتر تے ہیں۔ اور میں تو بنی اسرائیل سے نہیں ہوں۔اس لئے وقفے وقفے سے لکھتا ہوں۔حتی کہ اقتباس مستعار لیتا ہوں۔

کیا آپ سمجھتے ہیں کہ بلاگنگ سے آپ کو کوئی فائدہ ہوا ہے؟ یا کیا فائدہ ہوسکتا ہے؟

@ بلاگنگ سے اچھا خاصا فائدہ ہوا بھی ہے اور انشا اللہ ہوتا بھی رہے گا۔ علم میرے نزدیک ایک خزانہ ہے اور میں خزانے کی تلاش میں رہتا ہوں۔

میرا ماننا ہے کہ ادب صرف بے ادبوں کے لئے تخلیق کیا جاتا ہے۔مجھ سے بڑا بے ادب کوئی نہیں۔

آپ کی نظر میں معیاری بلاگ کیسا ہوتا ہے ؟

@ کسی بھی تحریرسے کوئی ایک جملہ یا ایک لفظ بھی دماغ میں فٹ ہوجائے دماغی لغت میں نیا اضافہ ہو جائے تو میں اس تحریر کو معیاری مانتا ہوں خواہ وہ بلاگ ہی کیوں نہ ہو۔

آپ کے خیال میں کیا اردو کو وہ مقام ملا ہے، جس کی وہ مستحق تھی ؟

@ عدالتی فیصلوں پر عمل درآمد کے بعد اردو شائد سرکاری زبان تو بن جائے لیکن زمانے میں دھوم مچانے کی گنجائش پھر بھی باقی رہے گی۔

اردو کے ساتھ اپنا تعلق بیان کرنے کو کہا جائے تو کیسے کریں گے ؟

@ اردو میری دوسری محبت ہے۔ پہلی محبت پنجابی ہے۔کیونکہ میری اماں پنجابی ہیں۔یوں میرا۔اور۔اردو کا تعلق گلابی اردو ۔والا ہے۔لیکن میری اصلاح کا سارا ذمہ اردو نے اٹھا رکھا ہے۔

آپ کے خیال میں جو اردو کے لیے کام ہو رہا ہے کیا وہ اطمینان بخش ہے ؟

@ ہاں اگر ترویج اردوسے مراد ۔اخبارات ۔رسائل اور ٹی وی چینلز ہیں توحالات حوصلہ افزا ہیں ۔لیکن زبان کوقوم پرستی کی بنیاد ہونا چاہیے۔جیسے بنگالیوں اور جرمن کی زبان ہے۔شائد اردو کی ترویج کے لئے ہمیں بنگالیوں جیسازبان پرست بننا پڑےگا۔وہی صورتحال اطمینان بخش ہوسکتی ہے۔

آنے والے پانچ سالوں میں اپنے آپ کو اور اردو بلاگنگ کو کہاں دیکھتے ہیں؟

@خود کو تو وہاں دیکھتا ہوں جس کا تذکرہ فیض صاحب نے کیا تھا ’’مقام فیض کوئی راہ میں جچا ہی نہیں۔‘‘لیکن دعا ہے کہ اردو۔اردو بلاگرز سے منسوب ہو جائے ۔

کسی بھی سطح پر اردو کی خدمت انجام دینے والوں اور اردو بلاگرز کے لیے کوئی پیغام؟

@ دکنی اردو کو سکنی اردو میں شامل کرلیا جائے تو مزہ آجائے۔

بلاگنگ کے علاوہ کیا مصروفیات ہیں ؟

@ پیشہ وارانہ مصروفیات کی وجہ سے میں غیرسماجی ہوں۔شائد کئی سال سے میں نے شام بھی نہیں دیکھی۔دوسری مصروفیات تو سر شام شرو ع ہوتی ہیں اور میری تو پہلی مصروفیت کی رات کی آخری پہر ختم ہوتی ہے۔ نئی مصروفیت کا تو مستقبل میں بھی امکان نہیں ۔

آپ کی زندگی کا مقصد کیا ہے ،کوئی ایسی خواہش جس کی تکمیل چاہتے ہوں؟

@ زندگی کا مقصدتو حضرتِ اقبال نے فرما دیا۔ ’’اوروں کے کام آنا ‘‘۔ خواہش یہ ہے کہ دین سے رشتہ مضبوط ہو جائے۔

 

اب کچھ سوال ذرا ہٹ کے۔۔۔

پسندیدہ:

1۔ کتاب ؟

@ ویسے قرآن کریم دنیا کی سب سے اچھی کتا ب ہے ۔اگر اسے اردو ترجمہ اور تفیسر کےساتھ پڑھاجائے۔اردو ادب میں’’راجہ گدھ ‘‘پسند ہے۔انگلش میں رابرٹ براوننگ اور کِیٹس کی نظمیں اچھی لگتی ہیں۔

2۔ شعر ؟

@ سینکڑوں شعر جو حسب حال یاد آجائے۔ابھی تو مجھے استاد مومن خان مومن کا شعر یاد آرہا ہے۔ ۔

تم میرے پاس ہوتے ہو گویا

جب کوئی دوسرا نہیں ہوتا

3۔ رنگ ؟

@ محبوب کا

4۔ کھانا ؟

@ سادہ غذا۔ جو بھی مل جائے خصوصا سبزیاں۔

5۔ موسم ؟

@ خزاں

6۔ ملک ؟

@ دل دل پاکستان ۔

7۔ مصنف ؟

@ بانو قدسیہ ، اشفاق احمدکرشن چندر۔منٹو ۔ویسے ہم عہد یوسفی میں زندہ ہیں۔

8۔ گیت؟

@میرے کان بہت سُریلے ہیں ۔مجھے خیال کی گائیکی اورسرگم بہت پسند ہے۔موسیقی ایسی ہونی چاہیے جسے سن کر باقاعدہ محسوس ہو کہ روح کو غذا ملی ہے۔فیض صاحب کا کلام ’’مجھ سے پہلی سی محبت ‘‘جب بھی سنوں مزا آتا ہے۔ٹھمری میں ’’یاد پیا کی آئے‘‘ جبکہ میڈم اقبال بانو نے کیا کمال کا راگ پیلو میں گایا ہے۔’’الفت کی نئی منزل کو چلا ‘‘۔مجھے تو بہت پسند ہے۔

9۔ فلم ؟

@God must be crazy

غلط /درست:

1۔ مجھے بلاگنگ کرنا اچھا لگتا ہے ۔

@ درست

2۔ مجھے اکثر اپنے کئے ہوئے پر افسوس ہوتا ہے؟

@ درست

3۔ مجھے کتابیں پڑھنے کا بے حد شوق ہے ؟

@ درست

4۔ مجھے سیر و تفریح کرنا اچھا لگتا ہے ؟

@ درست

5۔ میں ایک اچھا دوست ہوں ؟

@ نہیں

6۔ مجھے جلد ہی غصہ آجاتا ہے ؟

@ غلط

7۔ میں بہت شرمیلا ہوں ؟

@ غلط

8۔ مجھے زیادہ باتیں کرنا اچھا لگتا ہے ؟

@ غلط۔ مجھے زیادہ باتیں سننا اچھا لگتا ہے

آخر میں کوئی خاص بات یا پیغام ؟

@ میرا پیغام محبت ہے جہاں تک پہنچے ۔

منظرنامہ کے لیئے کوئی تجویز دینا چاہیں گے ؟

@اردو کی ترقی کے لئے کوشش جاری رکھیں۔

اپنا قیمتی وقت نکال کر منظرنامہ کو انٹرویو دینےکے لیئے آپ کا بہت بہت شکریہ

@ آپ کا بھی بہت بہت شکریہ

مصطفیٰ ملک
پاکستان کے تیسرے بڑے شہر فیصل آباد سے تعلق رکھنے والے مصطفی ملک شعبہ صحافت سے وابستہ ہیں ، قومی اخبارات میں ان کے بلاگ آرٹیکل چھپتے رہتے ہیں ، پاکستان سے بے بناہ محبت انہیں ورثہ میں ملی ہے اور اس کا عکس ان کے تحریروں میں دیکھا جا سکتا ہے ، اپنے عمومی بلاگ کے ساتھ ساتھ اردو میں باغبابی کے موضوع پربھی بلاگ لکھتے ہیں ، منظر نامہ انتظامیہ کا حصہ ہیں۔
http://mustafaji.blogspot.com

30 تبصرے:

    1. راجہ صاحب بابا جی سرکار سے یوں لگا جیسے آپ محترم بابا محمد یحیی خان صاحب سے مخاطب ہیں۔۔۔ ملاقات ضرور ہوگی۔ دنیا کافی تیزی سے سمٹ رہی ہے۔ 🙂
      شکریہ آپ کی نیک خواہشات کا۔

    1. محمد اسد بھائی ۔۔۔ نوکری کے علاوہ یہ میرا پہلا انٹرویو تھا۔ شناسائی کا فائدہ مجھے کچھ یوں ہوا کہ کچھ دوستوں سے شناسائی ہو گئی۔ اللہ تعالی آپ کواچھی صحت کے ساتھ خوش رکھیں۔۔ آمین

    1. رمضان صاحب آپ آنا چاہیں تو ضرور ملاقات ہو گی۔ موبائل پر رابطہ کرنے چاہیں تو میری خوش نصیبی ہوگی۔ محبت کے ہر سوال کا جواب میرے پاس ہاں میں ہے ۔انٹرویو پڑھنے کا اور حوصلہ بڑھانے کا شکریہ۔

  1. کیا بات ہے۔
    جناب مصطفی صاحب کمال کر دیا آپ نے صحافتی کردار ادا کر دیا ایسی شخصیت کو اپنے انٹرویو میں شامل کر کے ہمارا دل جیت لیا میری پسندیدہ شخصت کو اپنے بلاگ میں شامل کرنے کا شکریہ
    جناب اجمل ملک صاحب آپ کی سادگی پر جان قربان اللہ آپ کو ہمیشہ والدین کے سایہ کے نیچے اعلی مقام عطا فرمائے اور آپ کو آپ کے ہیوی بچوں پر قائم رکھے ۔۔۔۔۔۔آمین

    1. ماجد بھائی جن دوستوں اور سینئرز کی محبتوں کا میں مقروض ہوں۔ آپ ان میں سر فہرست ہیں۔ ہمیشہ آپ نے پیار کیا ۔بڑے ہو کربھی ہمیں چھوٹا نہیں سمجھا۔ میں آپ کو یقین دلاتا ہوں کہ میں محبتی قرض خواہوں کو نامراد نہیں لوٹاتا۔ جن دعاووں ، تمناووں اور خواہشوں کا آپ نے اظہار کیا ہے۔ میں انہیں ضرب دو کرکے لوٹا دوں گا۔ انشااللہ۔

  2. سر اجمل ملک وہ سایہ دار شجر ہیں جو ہر قسم کا سایہ اور محبت فراہم کرتے ہیں ، اگر دوست بن جائیں تو دوستوں والی،باپ والی شفقت، بھائی والی شفقت مجھے تولگتا ہے کہ اللہ پاک نے ان کو محبت بانٹنے کا بہت مظبوط نیٹ ورک دیا ہوا ہے ۔۔ اللہ پاک ان کو ہمیشہ خوش رکھے ۔۔ آمین

  3. بہت عرصہ بععد انٹرویو کا سلسلہ بحال ہونے پر منظر نامہ کی پوری ٹیم کو مبارکباد
    ماشاءاللہ اجمل ملک صاحب کا تعارف پڑھ کر اچھا لگا ۔۔۔ اللہ تعالیٰ آپ کو اپنی نیک نیتی اور کام میں اور ترقی عطا فرمائے ۔ آمین

  4. شناسائی سلسلے کی بحالی پر مبارکباد امید ہے یہ جاری رہے گا اور سالانہ انٹرویوز ایک سے ذیادہ ہونگے…..!
    اجمل ملک صاحب کے بارے میں جان کر اس لیے اور بھی زیادہ خوشی ہوئی کہ وہ فیصل آباد ہی کے ہونہار سپوت ہیں صحافتی ذمہ داریوں کے ساتھ بلاگنگ کو وقت دینا جہاں ایک طرف نہایت جذبے کا کام ہے تو دوسری طرف اس جذبے کو ملک صاحب میں جگانے کی جستجو پر مصطفی بھی مبارکباد کے مستحق ہیں کہ وہ آپ کے تخلیقی جوہر کو کھاگ جوہری کی طرح پرکھ پہچان کے ساتھ بلاگروں کے درمیان لے آئے

    1. عثمان صاحب اگر آپ جگت پوری ہیں تو ہم جُگت پوری مشہور ہیں۔۔ واقعی مبارکباد کے مستحق تو مصطفی ملک صاحب ہیں کہ ان کے پاس واقعی جوہری والی آنکھ ہے۔۔۔ لیکن اس سے قطعی یہ نہ سمجھا جائے میں کوئی ہیرا ہوں۔۔ آپ کا بہت شکریہ ۔۔۔

  5. یہ جان کر خوشی ہوئی کہ آپ “صحافی ” ہیں اور رزق حلال کھاتے ہیں
    معلوم نہیں میں “ایرا غیرا” ہوں کہ نہیں لیکن ایک گوناں گوں اطمینان ہے کے آپ “وغیروں ” کے بلاگ بھی پڑھتے ہیں امید ہے غیروں میں ہم بھی شامل ہوں گے
    آپ کا پیغام محبت ہے تو ہم محبتوں کے قدر دان
    “خوب نبھے گی جب مل بیٹھیں گے دیوانے دو”

  6. سبحان اللہ اسلم فہیم صاحب ۔۔۔ ہر نئے تبصرے اور تذکرے میں مجھے اپنی کوتاہیوں کا احساس بھی ہو رہا ہے اور اصلاح کو پہلو بھی نکل رہا ہے۔۔ رابطہ رہے گا۔ آپ کو بہت جلد غیروں سے نکال لوں گا۔ 🙂

  7. ماشاء اللہ۔
    اس پُر فتنہ دور میں صحافت میں رہ کر “رزقِ حلال” کا جتن کرنا اور پاکستان سے محبت کے بارے جان کر دل بہت خوش ہوا ہے۔

    اللہ آپ کو ثابت قدم رکھے اور خوشیاں عطا فرمائے۔

    ملک مصطفی صاحب اور منظر نامہ کا بہت شکریہ جن کی وساطت سے پاکستان سے محبت کرنے والے بلاگر کے بارے معلومات ملیں۔

    اللہ خوش رکھے۔

    1. جاوید گوندل صاحب ۔۔۔ بہت شکریہ آپ نے ٹائم نکال کر انٹرویو پڑھا لیکن یہ سچ ہے کہ پاکستان سے مجھے بہت پیار ہے۔۔ مجھے لگتا ہے یہ خطہ اللہ تعالی کے انعام کے طور پر ہمیں ملا ہے۔ جس میں وہ سب کچھ قدرت نے رکھ دیا ہے۔ جو یک مُشت بہت سے ممالک کے حصے میں نہیں آیا۔

    1. علی بھائی۔۔۔ اردو کے ارتقا کی تاریخ پڑھیں تو اندازہ ہوتا ہے کہ ارتقا کی بہت سے منازل اردو نے دکن میں طے کیں۔۔۔ اور سکنی اردو سے مراد ہے کہ جس اردو کو ہم آج کل پڑھ رہے ہیں۔ یعنی جو اردو ہمارے ارد گرد موجود ہے۔ اس لئے انٹرویو میں دکنی اردو کو سکنی کے ساتھ منسوب کیا تھا۔

  8. ملک صاحب بہترین شخصیت کا انٹرویو بھی بہترین انداز میں پیش کیا آپ نے ملک اجمل بھائی کو جاننے کے لئے اگر یہ تحریری کافی نہیں تو نا مکمل بھی نہیں ہے الفاظ کا چناو اور ملک اجمل بھائی کی شخصیت دونوں ہی کمال ہیں اللہ آپ کو صدا خوش رکھے

    1. بہت شکریہ ڈئیر وقاص ۔۔۔ انسان خود اچھا ہو تو اسے دوسرے بھی بھلے دکھائی دیتے ہیں۔۔۔ آپ نے تعریف کے دوران جس مبالغہ آرائی سے کام لیا ہے۔ دعا ہے کہ میں سچ میں ویسا ہو جاؤں۔۔۔ 🙂

  9. بہت ہی اچھی شخصیت کے انٹرویو کےلئے انتظامیہ کا شکریہ
    اجمل بھائی بہترین انٹرویو دیا ہے آپ نے میں نے اب تک جتنے بلاگرز پڑھیں ہیں ان میں سب سے زیادہ آ پ کے بلاگ کا مطالعہ کیا ہے اس لئے آپ کے ہر سوال کے جواب سے لگتا تھا مجھے آپ اب کیا کہیں گے ۔ اللہ آپ کو بھابی کو سلامت رکھے اپنے بچوں کی خوب ساری خوشیاں دیکھائے خوب قدر محبت صحت اور دونوں جہاں کی آسانیوں سے بلندیوں ملے۔ اپنی دُعاؤ ں میں اس بہن کو یاد رکھیں

    1. بہت شکریہ۔۔صداحترام۔ محترمہ بیگ صاحبہ۔ انٹرویو ۔ تو بس خیالات کے تبادلے کانام ہے۔ ہر سوال کے جواب میں جو لفظ ذہن میں آئے ۔ وہ مصطفی ملک صاحب نے جملے بنا کر چھاپ دئیے۔ یوں وہ میرے ساتھ منسوب ہو گئے۔ لیکن میری بہن۔۔اصل اثاثہ تو وہ الفاظ ہیں جوآپ نے میرے بلاگ کے بارے میں تحریر فرمائے ہیں۔ اطمینان قلب بھی یہی ہے۔آپ نے جو دعائیں بھیجی ہیں وہ ساری شکریہ کے ساتھ وصول پائی ہیں۔ دو عالم کی راحت کے ساتھ آپ سب کو نئی دعائیں بھجوا رہا ہوں۔ ۔۔ آپ کا بھائی۔ اجمل ملک

اپنا تبصرہ تحریر کریں

اوپر