آپ یہاں ہیں
صفحہ اول > تازہ تحاریر > کوثر بیگ سے شناسائی

کوثر بیگ سے شناسائی

حیدرآباد دکن کے روایتی گھرانے میں آنکھ کھولنے والی کوثر بیگ تخیلات کی دنیاکے عنوان سے خوبصورت حیدآبادی لہجے کی اردو میں بلاگ لکھتی ہیں،اردو سے محبت انہیں ورثے میں ملی جس کا اظہار ان کی تحریروں سے ہوتا ہے،ان کے لکھنے کے خواب کو ان کے بیٹوں نےبلاگ کی شکل میں حقیقت کا روپ بخشا،کوثر بیگ آج کل اپنی فیملی کے ہمراہ سعودی عرب کے شہر جدہ میں مقیم ہیں ان سے ہونے والی گفتگو نظرِ قارئین ہے۔

خوش آمدید !

شکریہ

کیسے مزاج ہیں ؟

@ حسبِ حال بحال

اپنے بارے میں کچھ بتائیں ؟

@اللہ کی بندی ہوں جس کو اللہ نے بہت ساری نعمتیں ، ہرطرح کے رشتے اور دوست عطا کئےہیں ۔خود ساختہ قید کو پسند کرتی ہوں اللہ سے امید کرتی ہوں کے دنیا سے پردہ کرنے تک اس قید میں مقید رہوں ۔
آپ کی جائے پیدائش کہاں ہے ؟ اور موجودہ رہائش کہاں ہے ؟

@ حیدرآباد دکن مقیم جدہ سعودی عربیہ
اپنی تعلیم، پیشہ اور خاندانی پس منظر کے بارے میں کچھ بتائیں ؟

@ تعلیم کچھ بھی نہیں مگر میری محنت جستجو نے میری گود میں تعلیم کی پرورش کی ہے ۔ میرے دادا حیدرآباد کے مشہور مشائخ مانے جاتے تھے جن کو بحرالعلوم کا خطاب دیا گیا تھا ۔آپ عثمانیہ یونیور سٹی کےدینیات کے وائس چانسلر تھے
اردو بلاگنگ کی طرف کب اور کیسے آنا ہوا ؟ آغاز کب کیا ؟

@ اپنی تسلی کے لئے کچھ نہ کچھ لکھتی رہتی تھی اور وہ غائب ہو جاتا بہت کوفت ہوتی جس کا پتہ بچوں کو بھی تھا ایک دن بیٹے نے بلاگ بنا کر دیا ایک دو پوسٹ کے بعد بالکل پلٹ کر نہ دیکھاکیونکہ وہ اردو میں نہیں تھا پھر بیٹے نے ایک اور بلاگ بنا کر دیا ایک دو بلاگرز سے میل اور فون پر بات بھی کی مگر کوئی خاص مدد نہیں ملی تو اس نے خود ڈھونڈ ڈھانڈ کر اردو ڈالی بہت سارا سجایا پھر مجھے کیسے پوسٹ کرنا ہیں کہاں لکھنا ہے سمجھایا ۔۔ پہلا کب بنایا تھا تو یاد نہیں دوسرا دس ستمبردو ہزار سات کو بنایا گیا تھا ۔
اخبارات اور رسائل کی موجودگی میں آپ نے لکھنے کیلئے بلاگ ہی کو کیوں منتخب کیا؟

@ اخبار اور رسائل میں ہماری خود کی مرضی کافی نہیں ہوتی نہ ہی میرا رابطہ باہر کی دنیا سے ممکن تھا پھرمیں تو بس ایسے ویسے ہی لکھتی ہوں معیاری کہاں ہوتا ہے میں اپنی دل کی باتیں اپنے تجربات و خیالات کو ضبط قلم کرتی ہوں مجھ جیسی من موجی کا اخبار میں کیا کام

کیا مراحل طے کیے آغاز میں اور کس قسم کی مشکلات پیش آتی تھیں ؟

@ ہر نیا کام آغاز میں دشوار ہی لگتا ہے پھر آہستہ آہستہ آہی جاتا ہے ۔اردو انسٹال کرنے اور دوسروں کے بلاگ پر کیسے جانا راستہ نظر نہیں آیا پھر سب بلاگرز تک رسائی ہو ہی گئی ۔
بلاگنگ شروع کرتے ہوئے کیا سوچا تھا؟ صرف بلاگ لکھنا ہے یا اردو بلاگنگ کو فروغ دینے کا مقصد پیش نظر تھا ؟

@ بیٹے نے سمجھایا تھا کہ( فورم پر میرا سب سے پہلے ایک بلاگ اورتھا ) فورم کا بلاگ ایک کنواں ہے اور یہ بلاگ ایک سمندر ہے وہاں بس مخضوص لوگ ہی دیکھ پاتے تھے مگر یہاں ساری دنیا سے اگر چاہے تو دیکھ سکتے ہیں ۔پھر میں یہاں کی ہو رہی تاکہ زیادہ سے زیادہ لوگ پڑھ سکیں
کن بلاگرز سے متاثر ہیں اور کون سے بلاگز زیادہ دلچسپی سے پڑھتی ہیں ؟
@دراصل مجھے پڑھتے رہنے کا جنون ہے سب ہی اچھے لگتے ہیں ۔

آپ نے اپنے بلاگ کا نام “تخیلات کی دنیا ” کیوں رکھا؟

@ تخیلات کی دنیا ۔۔ بہت کم وقت میں بہت زیادہ غور کرنے کے بعد یہ نام رکھا کیونکہ ہر تحریر سے پہلے سوچنے کا عمل آتا ہے میرے بلاگ میں میری یادیں ہیں، میری معلومات ہیں ،میری سرگز شت و باتیں ہیں جو تخیل سے منسلک ہوتی ہیں ۔
لفظ “ بلاگ ” سے کب شناسائی حاصل ہوئی ؟

@ نیٹ سے جب ملاقات ہوئی تو بے کاری میں کچھ بھی اردو کے ساتھ لکھ کر سرچ کرتی اور کوئی بلاگ سامنے آجاتا اور پڑھ لیتی سلیم صاحب کا بلاگ تو میرے میاں کے میل پر با قاعدہ آتا جسے وہ مجھ سے پڑھواتے تھے ۔
اپنے بلاگ پر کوئی تحریر لکھنی ہو تو کسی خاص مرحلے سے گزرتی ہیں یا لکھنے بیٹھتی ہیں اور لکھتی چلی جاتے ہیں ؟

@ دماغ میں کوئی بات ہو فرصت بھی ہو تو بس لکھ دیتی ہوں اور پوسٹ کردیتی ہوں کوئی کوئی تحریر کچھ معلومات چاہتی ہیں جیسے کوئی دینی مضمون ہوتو پھر ایک نظر دیکھ لیتی ہوں نہیں تو لکھنے کے بعد بھی پھر پڑھنا نہیں ہوتا اگر ایسا کروں تو بدلتے بدلتے مضمون کچھ کا کچھ ہوجاتا ہے اس لئے فوراً پوسٹ کردیتی ہوں
کیا آپ سمجھتی ہیں کہ بلاگنگ سے آپ کو کوئی فائدہ ہوا ہے؟ یا کیا فائدہ ہوسکتا ہے؟

@ ہاں جب دیکھتی ہوں کہ آج میرا بلاگ اتنے لوگوں نے پڑھا بھلے ہی کمنٹ نہ کیا ہو مگر لگتا ہے کہ دل کی بات کسی سے شیئر کرلی اور دل ہلکا ہلکا سا محسوس ہوتا ہے ااور سوچتی ہوں اپنی بات یا تجربہ سے دوسروں کا کچھ فائدہ ہوجائے۔بہت سارے اچھے اچھے ہستیوں سے قلمی ملاقات اور بات چیت ہوئی ہے یہ ہی فائدہ ہے ایک پردیس میں رہنے والی گھریلو خاتون کو اور کیا چاہے۔
آپ کی نظر میں معیاری بلاگ کیسا ہوتا ہے ؟

@ جس سے معلومات میں اضافہ ہو یا پھر دلچسپ ہو۔
آپ کے خیال میں کیا اردو کو وہ مقام ملا ہے، جس کی وہ مستحق تھی ؟

@ میں سمجھتی ہوں کہ اردو نے اپنی پیدائش کے ساتھ ہی اپنا مقام بنا لیا تھا جس کو مٹانے کی کوشش چلتی رہتی ہے مگر اردو کے چاہنے والے اس کو زندہ رکھنے کیلئے ایڑی چوٹی کا زور لگاتے رہتے ہیں ۔آپ دیکھیں دنیا کے کسی بھی ملک میں اردو بولنے والے کچھ تو موجود رہتے ہی ہیں یہ ہی اس کی بقا کی نشانی ہے ۔
اردو کے ساتھ اپنا تعلق بیان کرنے کو کہا جائے تو کیسے کریں گے ؟

@ اردو میری مادری زبان ہے میں اسے جنون کی حد تک پسند کرتی ہوں اس کی تر قی کی ہمشہ خواہش مند رہونگی ۔میری اردو ، پیاری اردو ، ،میری اچھی اردو
آپ کے خیال میں جو اردو کے لیے کام ہو رہا ہے کیا وہ اطمینان بخش ہے ؟

@ کام تو ہو رہا ہے مگر ہمارے بچپن میں اردو جتنی عام تھی اگر ویسی ہو تو اطمنان کیا جاسکتا ہے ۔اس میں کوئی شک نہیں کہ تقسیم ہند کے بعد اردو کے ساتھ ہندوستان میں سوتیلا سلوک ہوا، کیونکہ بٹوارے کے بعد اردو کو پاکستان کی زبان قرار دے دیا گیا۔یہ انڈیا کے لئے ہے مگر پاکستان میں تو یہ بہت مضبوطی سے قدم جمائے محسوس ہوئی

آنے والے پانچ سالوں میں اپنے آپ کو اور اردو بلاگنگ کو کہاں دیکھتی ہیں؟

@ ہر پل رنگ بدلتی دنیا ہے یہ ،آج کی بات کل نہیں ٹیکنالوجی ترقی کی طرف گامزان ہے بلاگنگ کی دنیا خوب ترقی کریگی مگر میں اس دوڑ میں شاید بھاگتی ہی رہ جاؤں یا ہوسکتا ہے رہو ں ہی نہیں، اگر رہی تو کوشش کا دامن چھوڑنے والی نہیں ویسے ان سالوں میں لکھنے کے معاملے میں خود کو پراعتماد محسوس کررہی ہوں ون اردو فورم ،بلاگ نے مجھے قلم پکڑنا تو سیکھا دیا ہے آگے آگے دیکھیے ہوتا ہے کیا۔

کسی بھی سطح پر اردو کی خدمت انجام دینے والوں اور اردو بلاگرز کے لیے کوئی پیغام؟

@ آپ سب کو بس یہ ہی کہنا چا ہتی ہوں کہ الگ الگ اردو کی خدمت کریں یا مل کر اردو کے لئے کام کریں ایک دوسرے کی حوصلہ افزائی کریں چاہے ایک لفظی ہی کیوں نہ ہو ۔
بلاگنگ کے علاوہ کیا مصروفیات ہیں ؟

@ گھر کے پکوان صفائی مہمانداری اور دوسرے کاموں سے فرصت پر فیس بک یا پھر دو تین فورمز ہیں ۔
آپ کی زندگی کا مقصد کیا ہے ،کوئی ایسی خواہش جس کی تکمیل چاہتی ہوں؟

@ عورت کی زندگی کا مقصد وہ نہیں طے کرتی اس کے سرپرست کرتے ہیں ۔جب تک والدین زندہ تھے ان سے ملنے کی خواہش ہردم دل میں رہتی تھی اب چاہتی ہوں کہ اپنے ذمہ دایوں سے سبکدوش ہوکر ایمان پر دم نکل جائے ۔
اب کچھ سوال ذرا ہٹ کے۔۔۔
پسندیدہ:
1۔ کتاب ؟

@ قرآن

2۔ شعر ؟

@ آئینہ رو کے سامنے بن کے آئینہ

حیرانیوں کا ایک تماشہ کریں گے ہم

3۔ رنگ ؟

@ سبز

4۔ کھانا ؟

@ دال قیمہ اور چاول ،مل کر کھانا

5۔ موسم ؟

@ گرمی سے پہلے موتیا بہار کا موسم

6۔ ملک ؟

@ مدینہ کی پرنور زمین

7۔ مصنف ؟

@ امام غزالی

8۔ گیت؟

@ کوئی ایک نہیں بتا سکتی

9۔ فلم ؟

@ مغل اعظم یا شرابی
غلط /درست:
1۔ مجھے بلاگنگ کرنا اچھا لگتا ہے ۔

@ جی درست

2۔ مجھے اکثر اپنے کئے ہوئے پر افسوس ہوتا ہے؟

@ نہیں ایسا بہت کم ہوتا ہے

3۔ مجھے کتابیں پڑھنے کا بے حد شوق ہے ؟

@ درست

4۔ مجھے سیر و تفریح کرنا اچھا لگتا ہے ؟

@ درست

5۔ میں ایک اچھی دوست ہوں ؟

@ہوسکتا ہے

6۔ مجھے جلد ہی غصہ آجاتا ہے ؟

@ جی ہاں مگر اسی رفتار سے چلے بھی جاتا ہے

7۔ میں بہت شرمیلی ہوں ؟

@ شاید

8۔ مجھے زیادہ باتیں کرنا اچھا لگتا ہے ؟

@ درست
آخر میں کوئی خاص بات یا پیغام ؟

@ فرائض اور حقوق کی ادائیگی خود پر لازم کرلیں

منظرنامہ کے لیئے کوئی تجویز دینا چاہیں گی؟

@ آپ لوگ ہی بہتر جانتے ہیں ۔
اپنا قیمتی وقت نکال کر منظرنامہ کو انٹرویو دینےکے لیئے آپ کا بہت بہت شکریہ

@ ارے نہیں بھئی میں ہی لیٹ ہوگئی ان سوالات کے آتے ہی مصروفیت بھی بھاگے چلے آ ئی ،سوری جواب دیتے دیتے تاخیر ہوگئی ۔مجھے اس قابل سمجھا جس کا تہہ دل سے شکریہ ادا کرتی ہوں ۔اللہ آپ سب پڑھنے والوں اور محمد اسلم فہیم بھائی کو سدا شاد و آباد رکھے۔

محمد اسلم فہیم
محمد اسلم فہیم پیشے کے اعتبار سے ہومیوپیتھک ڈاکٹر ہیں، ان کی تحاریر سے پاکستان کی مٹی کی خوشبو آتی ہے۔ وہ سادہ انداز میں عام لوگوں کی کہانیاں خاص بنانے کا ہنر جانتے ہیں۔ حرف آرزو کے نام سے بلاگ لکھتے ہیں اور منظرنامہ کے سلسلہ شناسائی کی انتظامیہ کا حصہ ہیں۔
http://www.draslamfaheem.com

35 تبصرے:

  1. ما شاء اللہ ما شاء اللہ۔۔۔۔۔ کچھ کچھ تو آپ کو تحاریر اور بلاگ سے پہلے ہی جانتا تھا، یہ تفصیلی انٹرويو مستزاد رہا کہ اس کے باعث کافی کچھ نیا جاننے کو ملا ۔ پڑھ کر اور جان کر بہت اچھا لگا۔ دنیائے بلاگ میں ہمارے ہندوستان سے چند ہی افراد ــــــ جنکو بآسانی انگلیوں پر گنا جاسکتا ہے ــــــ سیارے پر اپنا وجود اولا ظاہر ثانیا قائم و دائم رکھے ہوئے ہیں جن میں سے ایک محترم و معتبر نام آپکا ہے۔ اللہ سبحانہ و تعالی آپکی مساعی کو شرف قبولیت بخشے۔ یہ انکشاف تو واقعی جھٹکا دے گیا کہ آپ دو ہزار سات سے پرورشِ لوح و قلم کررہی ہیں۔۔۔۔۔ سبحان اللہ جی سبحان اللہ۔۔۔۔ ڈاکٹر صاحب کا بھی شکریہ

    1. بڑی نوازش و مہربانی آپ نے اتنا تفصیلی تبصرہ کیا
      اس بات کا مجھے بھی احساس ہے کہ ہندوستان سے برائے نام اردو بلاگرز ہیں آپ سب کے خلوص نے بہت متاثر کیا آپ جیسے خاموش قاری نے بلاگ پر اپنی آمد سے میرا حوصلہ بڑھایا ہے ۔
      اللہ آپ کو دونوں جہاں میں کامیاب رکھے

  2. لطف آیا پڑھ کر لگتا ہی نہیں کہ کوئی فارمل انٹرویو ہے. اسلم فہیم صاحب کو بھی داد دینی پڑے گی. محترمہ کوثر بیگ کو جان کر ویسا ہی لگا جیسا انھیں پڑھ کر تاثر پیدا ہوتا ہے. بہت عمدہ. یہ بلاگ بھی بہت اچھا لگا.

    1. دیکھیے ہمارا بلاوا آپ کو یہاں کھیچ لایا بہت بہت تشکر ثاقب بھائی ۔۔ آپ بھی بہت اچھا اردو کی خدمت کرتے ہیں اسلم بھائی کی اپنائیت اور توجہ کا یہ انٹرویو منہ بولتا ثبوت ہے باقی دوسرے بلاگرز بھی بہت اچھے ہیں آپ ہماری محفل میں آیا جایا کریں ہمیں بھی اچھا لگے گا۔ تبصرے کا دلی شکریہ

  3. باجی وڈھی، سلام عرض ہے، یوں تو آپ سے فیس بک پر اور ادھر ادھر سے رابطہ ہو ہی جاتا ہے مگر آج آپ کے بارے تفصیلی اور ایک جگہ پر پڑھنے کا اتفاق ہوا، ہمیشہ کی طرح بہت اچھا لگا، منظرنامہ کے منتصمین کا بھی شکریہ کہ ایسے ایسے محبت کرنےوالے لوگوں کا تعارف کرواتے ہی رہتے ہیں۔ اللہ ہماری اس بلاگر پارٹی کو سلامت رکھے

    1. وعلیکم السلام
      راجہ بھیا آپ ہیں ہی اتنے ملنسار اور پاپولر کے جہاں بھی دیکھو۔ آپ نظر آتے ہیں
      جی بیشک یہ منظر نامہ ہم سب بلاگرز کو متحد کرنے میں بہت اہم کردار نبھا رہا ہے اللہ اس کے چلانے والے کے وقت میں برکت دے ۔
      آمین

  4. ماشااللہ آپ کا باقاعدہ تعارف پڑھ کر اچھا لگا، ویسے آپ کے انٹرویو سے پہلے ہی ایسے ہی آپ کی تصویر بنتی تھی، خدا تعالی آپ کے من کی مرادیں پوری فرمائے۔

  5. ماشاءاللہ کوثر بہنا۔۔۔۔ بہت ہی اچھا لگا آپ کے بارے میں جان کر بہت قربت محسوس ہوئی ایک فیملی محسوس ہوتی ہے الحمدللہ بلاگرز کی ۔۔ اللہ اسے قائم رکھے ، آمین
    اسلم بھائی کا بہت شکریہ کہ وہ اس بلاگرز فیملی کے ممبران کو ایک دوسرے سے تفصیلی متعارف کروانے کا فریضہ بہت خوبصورتی سے انجام دے رہے ہیں ۔

    1. آمین
      ٹھیک کہا آپ نے ہم ایک فیملی کی طرح لگتے ہیں
      میں بہت ہی باتونی ہوں جو بات میرے دل میں ہوتی ہے برملا کہ دیتی ہوں آپ کو اچھی لگی میری باتیں یہ جان کر مجھے بہت اچھا لگا ۔
      چند دنوں سے آپ کے بلاگ کا مطالعہ کررہی ہوں آپ اتنا رواں دواں لکھتی ہیں پڑھکر سوچتی ہوں کہ پہلے آپ کے بلاگ پر کیوں نہیں گئی ۔۔ اللہ شاد رکھے آپ کو

    1. آمین ۔ اللہ پاک ہر وہ دعا آپ کے اور ہمارے تمام بلاگرز کے حق میں بھی عنایت کردے جو آپ نے میرے لئے مانگی ہیں ۔ اللہ آپ کو خوش رکھے
      آپ کے بلاگ کی ہر پوسٹ بہت خوب لکھتے ہیں لکھتے رہیں

  6. کوثر صاحبہ کے بارے میں جان کر بہت خوشی ہوئی،کچھ مواقعو ں پر ان سے آن لائن بات ہوئی ہے مگر وہاں تفصیلی تعارف ممکن نہ تھی۔ اہل زبان کی موجودگی ہماری اصلاح اور تربیت کا کام بھی دیتی ہے اور اُردو بلاگرز کا دامن ہمیشہ ایسی خوبصورت شخصیتوں کی مہکتی ہوئی تحاریر سے معطر رہے گا۔

  7. ماشا اللہ میڈم انٹرویو پڑھ کر اچھا لگا۔۔۔۔ انسان کو واقعی اللہ کا بندہ ہی ہوناچاہیے۔ اور پھر آپ نے جس پسندیدہ شہر کا تذکرہ ہے۔۔۔ وہ آپ کی دین سے محبت کا اور آقا ئے دو جہاں سے عقیدت کا ثبوت ہے۔۔۔ آپ کے لئے بہت سے دعائیں۔۔ اللہ تعالی آپ سب کو خوش رکھیں اور یونہی تخیلات کا تبادلہ کرتی رہیں۔۔

    1. آپ کے انمول دُعاؤ ں کے لئے مشکور و ممنون ہوں
      جب بھی مدینہ شریف جاتی ہوں اتنی ہر خیال سے بے فکر ہوجاتی ہوں لگتا ہی نہیں کہ دنیا کی ہی سر زمین پر ہوں بس نماز کا خیال اور زیارت کی فکر لگی رہتی ہے جب واپس آتے ہیں تو لگتا ہے کے ایک حسین خواب کے بعد پھر دنیا کے چھگڑوں میں پھنس گئی ہوں ۔
      اللہ آپ کو صحت و سلامتی کے ساتھ خوش و خرم رکھے۔

  8. ڈاکٹر محمد اسلم فہیم بھائی صاحب اور منظر نامہ کے انتظامیہ کی بہت شکر گزار ہوں کہ انہوں نے مجھے اس قابل سمجھا
    آپ سب کے خلوص کو میرا دلی سلام
    اللہ اس محفل کو سدا قائم و دائم رکھے

اپنا تبصرہ تحریر کریں

اوپر